آئی جی پنجاب پولیس کی جانب سے پولیس اہلکاروں پر سمارٹ فون کے استعمال پر پابندی کے باوجود پولیس اہلکار سرِعام فون استعمال کر رہے ہیں

وردی میں ملبوس پولیس اہلکار آئی جی آفس کے سامنے پولیس وین میں کھڑا ہو کر سب کے سامنے سمارٹ فون استعمال کرتا رہا، ویڈیو سامنے آگئی

Usman Khadim Kamboh عثمان خادم کمبوہ پیر ستمبر 23:06

آئی جی پنجاب پولیس کی جانب سے پولیس اہلکاروں پر سمارٹ فون کے استعمال ..
لاہور (اردو پوائنٹ اخبار تازہ ترین۔09ستمبر2019ء) ترجمان وزیر اعلیٰ پنجاب ڈاکٹر شہباز گِل نے پولیس اہلکاروں کی جانب سے موبائل فون استعمال کرنے پر پابندی کے بارے میں اپنے ٹویٹ میں بتایا تھا کہ آئی جی پنجاب کی طرف سے جاری کئے گئے مراسلہ کے مطابق دوران ڈیوٹی موبائل فون کے استعمال پر پابندی صرف پولیس اہلکاروں کے لئے ہے اور آئندہ ایس ایچ او عہدہ سے کم کوئی اہلکار اگر دوران ڈیوٹی موبائل استعمال کرتا ہوا پایا گیا اس کے خلاف کاروائی کی جائے گی۔

لیکن اب ایک ویڈیو سامنے آئی ہے جس میں دیکھا جا سکتا ہے کہ وردی میں ملبوس پولیس اہلکار آئی جی آفس کے سامنے پولیس وین میں کھڑا ہو کر سب کے سامنے سمارٹ فون استعمال کر رہا ہے۔ 
 آئی جی پنجاب نے پولیس اہلکاروں کے موبائل استعمال پر پابندی لگا دی تھی۔

(جاری ہے)

تاہم اب پولیس افسران کے لیے نئی ہدایات جاری کر دی گئی ہیں۔

میڈیا رپورٹس میں بتایا گیا ہے کہ سی پی او راولپنڈی نے ہدایت نامے میں تبدیلی کر دی ہے۔جس کے بعد پولیس اسٹیشن پرعام سائلین کے موبائل فون لے کر جانے پر عائد پابندی اٹھا لی گئی ہے۔ ۔صرف ایس ایچ او اور ہیڈ محرر ٹچ اسکرین یا اینڈرائڈ فون رکھ سکیں گے۔پولیس افسران اور پولیس اہلکاروں پر سمارٹ فون استمال کرنے پا پابندی برقرار ہے۔واضح رہے کہ انسپکٹر جنرل پولیس پنجاب کیپٹن (ر) عارف نواز خان نے پولیس اہلکاروں کے موبائل استعمال پر پابندی لگا دی تھی ۔

اے جی آپریشن نے تمام آر پی اوز اور ڈی پی اوز کو مراسلہ ارسال کردیا تھا۔ جاری کردہ مراسلے کے مطابق مطابق ایس ایچ او اور انچارج سے نچلے رینک کا پولیس اہلکار ڈیوٹی کے دوران فون استعمال نہیں کرے گا۔ڈیوٹی کے دوران کوئی بھی اہلکار ویڈیو نہیں بنائے گا ۔ ڈیوٹی پر موجود اہلکار اپنے کسی افیسر کی ویڈیو بھی نہیں بنائے گا ۔اگر کوئی اہلکار موبائل استعمال کرتا پایا گیا تو اسکے ساتھ انچارج کے خلاف بھی کارروائی ہوگی۔