دیہی علاقوں میں فصلات کے اکثر کھیتوں میں غیر یکساں ذرخیزی مختلف مسائل پید ا کررہی ہے ،فصلات کی مختلف نشوونما ، قد اور غیر یکساں بڑھوتری کو روکنے کیلئے فوری اقدامات کرناہوں گے ،ماہرین زراعت

بدھ ستمبر 15:31

فیصل آباد (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - اے پی پی۔ 11 ستمبر2019ء) دیہی علاقوں میں فصلات کے اکثر کھیتوں میں غیر یکساں ذرخیزی مختلف مسائل پید ا کررہی ہے لہٰذا فصلات کی مختلف نشوونما ، قد اور غیر یکساں بڑھوتری کو روکنے کیلئے فوری اقدامات کرناہوں گے۔ماہرین زراعت نے بتایاکہ کاشتکاروںکو کھیتوں میں یکساں ذرخیزی لاتے ہوئے فی ایکڑ پیداوار میں اضافہ کے جمود کو توڑنا ہو گاکیونکہ پیداوار میں بہتری لاکر سرسبز انقلاب کی راہ ہموار کی جاسکتی ہے۔

انہوں نے کہاکہ ہمیں کھیتوں میں موجود خفیہ پوٹینشل اور نظر انداز زرعی عوامل پر بھی توجہ مرکوز کرنا ہوگی ۔ انہوںنے کہاکہ ایک ہی کھیت کے مختلف حصوں میں ذرخیزی کا بہت بڑا تغیر نظر آتا ہے جس کی بناء پر مختلف پودوں کی خوراک اور پانی کی مختلف ضروریات ہوتی ہیں۔

(جاری ہے)

انہوں نے کہا کہ پودوں کی نباتاتی اور جنسی نشوونما میں بہت زیادہ تغیر وقوع پذیر ہونے کی وجہ سے فصل بہت بڑے مسئلے سے دوچار ہو جاتی ہے اوراسطرح کی کیفیت کاشتکار کی سمجھ سے بالاتر ہو جاتی ہے۔

انہوں نے کہاکہ باوجود انتھک محنت اور مشقت کے کاشتکار اپنی فصل کی پیداوار میں خاطر خواہ اضافہ نہیں کر پاتے۔انہوں نے مزید کہا کہ اس مسئلہ کی وجہ سے ہماری مختلف فصلات کی ملکی پیداوار جمود کا شکار ہے جسے توڑنے کیلئے کاشتکاروں کو اپنے کھیت کی ذرخیزی کو یکساں بنانا ہو گا نیزاس مقصد کیلئے لیزر لیولر سے زمین کی ہمواری،زمین کی سخت تہہ کو توڑنے کیلئے دو تین سال بعد کھیت میں گہرا ہل چلانا،دیسی گوبر کا استعمال اور کھیتوں میں موجود شور کے ٹکڑوں کی گندھک کے تیزاب سلفیورک ایسڈ سے اصلاح انتہائی ضروری ہے۔

متعلقہ عنوان :