وادی نیلم کے سیاحتی مقام کیل نکہ میں لینڈ مافیا نی1473 کنال خالصہ سرکار و جنگل کی زمین پر قبضہ کر لیا

بدھ ستمبر 15:42

آٹھ مقام(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - این این آئی۔ 11 ستمبر2019ء) وادی نیلم کے سیاحتی مقام کیل نکہ میں لینڈ مافیا نی1473 کنال خالصہ سرکار و جنگل کی زمین پر قبضہ کر لیا، غیر قانونی تجاوزات،تعمیرات جاری، قابضین کو بے دخل کرنے کا عدالتی حکم انتظامیہ نے ردی ٹوکری کی نذر کر دیا، جنگلات کی بے دردی سے کٹائی جاری، قبضہ مافیا نے علاقہ کے عوام کو تنگ کرنا شروع کر دیا انتظامیہ لینڈ مافیا کے سامنے بے بس، عوام کا شدید احتجاج۔

حکام نے نوٹس لینے کی اپیل۔ تفصیلات کے مطابق آزاد کشمیر کے ضلع آٹھمقام کے بالائی علاقہ کیل میں سیاحتی مقام کیل نکہ میں لینڈ مافیا نے ملی بھگت سے سرکاری زمین خالصہ سرکار اور جنگل کے 1473کنال دس مرلہ رقبہ پر قبضہ کر لیا ہے۔ لینڈ مافیا نے جنگل کے رقبہ سے سر سبز درختان کاٹ دئیے ہیں اور کم ازکم 15 کے قریب مکانات تعمیر کر لئے ہیں مزید کی تعمیر جاری ہے ۔

(جاری ہے)

لینڈ مافیا کے سرغنہ قلندر خان ، نور عالم، طواسین، راج ولی، محمد یوسف ،عالم خان، غلام حیدر، سائیں، نذیر حسین، غلام حسن، محمد شفیع، محمد اقبال، ولی احمد نے سرکاری رقبہ جات پر قبضہ کرکے غیر قانونی تعمیرات شروع کر رکھی ہیں ۔ علاقہ کے دیگر لوگوں کا پانی راستہ روک لیا ہوا ہے۔ عوام علاقہ نے سپریم کورٹ سے رجوع کیا تھا ایک سال قبل سپریم کورٹ آزادکشمیرنے انتظامیہ کو قابضین سے سرکاری زمین واگزار کرنے کا حکم دیا تھا۔

لیکن ایس ڈی ایم شاردہ نے اس وقت برف باری کا بہانہ بنایا تھا۔ عدالتی حکم پر عملدرآمد کے لئے ڈپٹی کمشنر سمیت حکام کو درخواستیں دی گئیں لیکن شاردہ انتظامیہ ایس ڈی ایم اور تحصیلدار مٹھی گرم کر کے خاموش ہو جاتے ہیں۔ قبضہ مافیا مسلسل انکروچ کر کے جنگل کی زمین پر قبضہ کر رہا ہے۔ جنگلات کے درخت کاٹ کر رقبہ صاف کر دیا گیا ہے ۔ جبکہ تجاوزات کو مسمار کر نے کے لئے کوئی اقدامات نہیں کئے جا رہے ہیں۔

علاقہ کے وفد جس کی قیادت محمد حنیف گجر، خان عالم چوہدری و دیگر نے بتایا کہ قبضہ مافیا گائوں کے لوگوں کو قتل اور ان کے گھر جلانے کی دھمکیاں دیتے ہیں۔ نو ستمبر کو خان عالم نامی شخص اور اس کے بیوی بچوں کو یرغمال بنا کر زدوکوب کیا ہے ۔ اور رات کو کھلے آسمان تلے گزارنے پر مجبور کئے رکھا۔ تصادم میں محمد اسلم نامی شخص شدید زخمی ہوگیا تھا جو کہ سی ایم ایچ مظفرآباد میں زیر علاج ہے ۔

ایس پی نیلم کی ہدایات پر ملزمان کے خلاف ایف آئی آر درج کی گئی ہے لیکن کوئی ملزم گرفتار نہیں ہوا ہے۔ قبضہ مافیا کی غنڈہ گردی سے پورے علاقہ میں خوف ہراس کی فضا ہے ۔ مافیا کے عناصر عوام کو جنگل اور چراہ گائوں کے راستے بند کئے ہوئے ہیں۔ پانی روک رکھا ہے۔ عوام حکومتی و انتظامی غفلت و لاپروائی پر سراپا احتجاج ہیں ۔ انھوں نے صدر ریاست وزیر اعظم چیف جسٹس، چیف سیکرٹری، جی او سی مری سے نوٹس لینے کی استدعا کی ہے۔

انھوں نے کہا کہ قبضہ مافیا کے خلاف کاروائی نہ ہونے پر 400 سے زائد نفوس نقل مکانی پر مجبور ہوں گے۔ قبضہ مافیا کی غنڈہ گردی کی وجہ سے علاقہ میں لاء اینڈ آرڈر کی صورتحال خراب ہے کسی بھی وقت مافیا کوئی بھی حادثہ کر سکتا ہے۔ آئی جی پولیس ملزمان کے خلاف کاروائی کی ہدایت کریں۔