کراچی یونین آف جرنلسٹس دستور کے زیر اہتمام صحافیوں کے لیے دعوت حلیم کا اہتمام

اس وقت میڈیا انڈسٹری پر کڑا وقت ہے اور مسائل بے شمار ہیں، سیکریٹری جنرل عارف خان صحافیوں کی ہیلتھ کارڈ کا معاملہ ہو ان کی ملازمت کا یا مالکان کے مسائل اس وقت سب کو ایک جگہ اور اتحاد کے ساتھ اس مرحلے سے نکلنے کے لئے اجتماعی کوشش کرنا ہوگی

بدھ ستمبر 23:39

کراچی (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - این این آئی۔ 11 ستمبر2019ء) کراچی یونین آف جرنلسٹس دستور کی جا نب سے دعوت حلیم میں صحا فیوں،سیاسی و مذہبی جماعتوں کے رہنمائوں، تاجربرادری، علم و ادب سمیت دیگر شعبہ ہائے زندگی سے تعلق رکھنے والی معروف شخصیات نے شرکت کی۔ دعوت حلیم میں صحا فیوں سمیت تمام مکتبہ فکر کے لوگوں کو ایک جگہ پر جمع کر نااور صحافیوں کے لئے اچھی تقریبات کا انعقاد لائق تحسین ہے۔

کے یو جے صحافیوں کے حقوق کے لیے جدوجہد کرنے کے ساتھ ساتھ ان کے اہل خانہ کے لیے صحت مندانہ سرگرمیوں کا انعقاد کرتی ہیں ایسی سرگرمیاں شہر میں جاری ر ہنی چاہیے۔ ان خیالات کا اظہار مختلف سیاسی و سماجی شخصیات نے کراچی یونین آف جرنلسٹس دستور کے زیر اہتمام منعقدہ دعوت حلیم میں میڈیا سے گفتگوکرتے ہو ئے کیا۔

(جاری ہے)

10محرم الحرام 10ستمبربروزمنگل گلشن اقبال فاران کلب میں منعقد ہو نے والی کراچی یونین آف جرنلسٹس دستور کی روایتی دعوت حلیم میں آنے والے مہما نوں کا استقبال کراچی یونین آف جرنلسٹس دستور کے صدر طارق ابو الحسن،جنرل سیکرٹر ی محمدعارف خان،نا ئب صدور محمد رضوان بھٹی، شمس کیر یو اوراراکین مجلس عاملہ سمیت دیگر نے کیا۔

کراچی یو نین آف جرنلسٹس دستور کے سیکرٹری محمد عارف خان نے دعوت حلیم کے موقع پر میڈیا سے گفتگوکرتے ہو ئے کہا کہ اس وقت میڈیا انڈسٹری پر کڑا وقت ہے اور مسائل بے شمار ہیں، چاہے صحافیوں کی ہیلتھ کارڈ کا معاملہ ہو ان کی ملازمت کا یا مالکان کے مسائل اس وقت سب کو ایک جگہ اور اتحاد کے ساتھ اس مرحلے سے نکلنے کے لئے اجتماعی کوشش کرنا ہوگی۔

موجودہ صورتحال نے پوری صحافی برادری کو سخت تشویش میں مبتلا کررکھا وفاقی حکومت کی جانب سے اشتہارات کے حوالے سے واضح پالیسی آنی چاہیے یہ میڈیا کی بقا کا معاملہ ہے ہزاروں کارکنوں کا مستقبل دائو پر لگا ہوا ہے، ان کے گھروں میں فاقوں کی نوبت آچکی ہے۔ کسی فور م پر صحافیوں کی آواز نہیں سنی جارہی ہیں،انہوں نے کہا کہ آپس کی دھڑبندیوں نے صحافیوں کی آواز کو کمزور کردیا ہے ہمیں آپس کے اختلافات کو بھلا کر ایک دوسرے کا ساتھ دینا ہوگا۔

کیوں کہ یہ پوری صحافی برادری کا معاملہ ہے۔انھوں نے حکومت سے مطالبہ کیا کہ صحافیوں کی چھانٹیوں کا سلسلہ فوری طور پر روکا جائے، انھیں ان کی بنیادی سہولیات، تنخواہیں اور بقایا جات ادا کیے جائیں۔کراچی یونین آف جرنلسٹس دستور کی جا نب سے دعوت حلیم میں شریک مہمانوں میں جماعت اسلامی کراچی کے امیرحا فظ نعیم الرحمن،بحالی کمیٹی ایم کیو ایم کے ڈاکٹر فاروق ستار،ڈی ایم سی ضلع وسطی کے چیئرمین ریحان ہاشمی،جماعت اسلامی کراچی کے سیکرٹر ی اطلاعات سید زاہد عسکری،پاک سر زمین پارٹی کے رہنما حفیظ الدین، پا کستان فیڈ رل یونین آف جرنلسٹس دستور کے سیکرٹری جنرل سید سہیل افضل، اسسٹنٹ سیکرٹر ی جنرل شعیب احمد، کراچی پریس کلب کے صدر امتیازخان فاران،جنرل سیکرٹری ارمان صابر،جو ائنٹ سیکرٹر ی حنیف اکبر اراکین مجلس عاملہ،کر اچی واٹر اینڈ سیو ریج بورڈ کے مینیجنگ ڈائریکٹر انجینئر اسداللہ خان،ڈائر یکٹرمیڈیا رضوان حیدر، سینئر صحافی و ایڈیٹرجنگ لندن ہمایوں عزیز،چیف ایڈیٹرروزنامہ جسارت کراچی اطہرہاشمی، ایڈیٹر جسارت مظفر اعجاز،ڈپٹی ایڈ یٹر روزنامہ امت کراچی کے امجد ارشاد چو ہدری، راشد عزیز،ایڈیٹر رپورٹنگ روزنامہ جسارت مسعود انور،چیف رپورٹر روزنامہ جسارت واجد حسین انصاری اوصا ف کے چیف رپورٹر ضیا قریشی،سا بق صدر کے پی سی سراج احمد، سابق سیکرٹری اورآن لائن کے بیورو چیف عامر لطیف،سابق سیکرٹر ی اے ایچ خانزادہ،مقصود احمد یوسفی،خورشید عباسی،کرائم رپو رٹر ایسوسی ایشن کے صدر شاہد انجم،سیکر ٹر ی طحہ عبیدی،را عمران اشفاق، محمد ریحان چشتی،پاکستان ایسوسی ایشن آف پریس فوٹوگرافرز (پیپ)کے سیکرٹری آصف جئے جا، سینئر فوٹو جرنلسٹس اطہر حسین، نعمان نظامی،محمد احمد،محمد فرید،شعیب احمد سمیت دیگر شعبہ ہائے زندگی سے تعلق رکھنے والی معروف شخصیات اور خواتین صحافیوں کی بڑی تعدادنے دعوت حلیم میں شرکت کی۔

دعوت حلیم کے اختتام پر صدر کے یو جے کے طا رق ابو الحسن اور جنرل سیکرٹری محمد عارف خان نے دعوت حلیم میں شرکت کرنے والے معزز مہمانوں کا شکریہ ادا کیا۔