Live Updates

تحر یک آزا دی کشمیر کے نا م پر جلسو ں کے ذریعے انتخا بی مہم کی شر وعا ت ، صحت کا رڈ کا اجر اء، پو ری قو م کے لئے مذاق بن کر رہ گیا ہے‘شوکت جاوید

اگر وزیراعظم پاکستان بے نظیر بھٹو کی طرح قومی کشمیر پالیسی تشکیل دے کر تحریک بیس کیمپ کا دورہ کرتے تو ان کے دائیں با ئیں بلا ول بھٹو ، شہبا ز شر یف ، مولانا فضل الرحمن ،اسفند یا ر ولی ، اختر مینگل سمیت قومی سیا سی ودونو ںاطر اف کی کشمیر ی قیا دت بیٹھی ہو تی تو بھا رتی ایو انو ں میں لر زا طا ری ہو جاتا

جمعرات ستمبر 15:00

ظفر آبا د(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - این این آئی۔ 12 ستمبر2019ء) وزیر اعظم پا کستا ن عمر ان خا ن اپنے دورہ مظفر آبا د کے مو قع پر دارلحکو مت کو سوئی گیس کی فراہمی ،مہا جر ین کے گزارہ آلائونس میں اضا فہ ، لیپہ ٹنل کی تعمیر کے لئے کا ٹے جا نے والے فنڈز کی بحالی ،وفا قی ملا زمتو ں میںاڑہائی فیصد سے کو ٹہ بڑ ھا کر5 فیصد ،فو رس لو ڈشیڈنگ کے مکمل خا تمے سمیت اجتما عی عوا می مسائل حل کر نے کے لئے عمل درآمد کاا علا ن کر یں ،افسوس صد افسوس اگر وزیراعظم پاکستان قائد عوام شہید ذوالفقار علی بھٹو ، دختر مشرق محترمہ بے نظیر بھٹو شہید کی طرح قومی کشمیر پالیسی تشکیل دے کر تحریک بیس کیمپ کا دورہ کرتے تو ان کے دائیں با ئیںچیئر مین بلا ول بھٹو زرداری ، میا ں شہبا ز شر یف ، مولانا فضل الرحمن ،اسفند یا ر ولی ، اختر مینگل سمیت قومی سیا سی ودونو ںاطر اف کی کشمیر ی قیا دت بیٹھی ہو تی تو بھا رتی ایو انو ں میں لر زا طا ری ہو جاتا ، دتحر یک آزا دی کشمیر کے نا م پر جلسو ں کے ذریعے انتخا بی مہم کی شر وعا ت ، صحت کا رڈ کا اجر اء، پو ری قو م کے لئے مذاق بن کر رہ گیا ہے۔

(جاری ہے)

چیئر مین پیپلز پا رٹی فخر پا کستا ن بلا و ل بھٹو زرداری کی طر ف سے مظلو م کشمیر یو ں سے عید منا نے کے بعد بھی 6 روزہ دورے کا پر وگرام مر تب ہو تے ہی وزیراعظم پا کستا ن عمر ان اور وفا قی وزراء کی دوڑیں آزاد کشمیر لگنے کی فضا قا ئم ہو چکی ہے ان خیالات کااظہار پاکستان پیپلزپارٹی آزاد کشمیر کے سابق میڈیا ایڈوائزر شوکت جاوید نے وزیراعظم پاکستان کی طرف سے مظلوم کشمیریوں سے اظہار یکجہتی کے لئے 13 ستمبرکو دارالحکومت مظفرآباد میں منعقد ہونے والے جلسہ عام پر تبصرہ کرتے ہوئے کیا ۔

انہوں نے کہا کہ ایک سا ل تک وزیر اعظم پا کستا ن نے آزادکشمیر کی طر ف منہ کر کے بھی دیکھنا گو ارہ نہیں کیا اور اب پی ٹی آئی سمیت سا ری سیا سی جما عتو ں کو ایک دم سے کشمیر ی شدت سے یا د آنا شر وع ہو گئے تاہم اللہ کر ے دیر آیددرست آیدکے مصدا ق پر تحر یک آزادی کو عملاًً فا ئد ہ پہنچ سکے ، شو کت جا وید نے کہا مقبو ضہ جمو ں کشمیر میں کر فیو نفاذ ، پیلٹ گن استعمال، انٹر نیٹ پر پابندی ، کریک ڈائون سے پیدا ہونے والی خوفناک صورتحال کے پیش نظر عالمی اداروں کے ذریعے خوراک ، ادویات اور بنیادی ضروریات کی فراہمی کے لئے ہنگامی اقدامات عمل میں لائے جائیں اور سفارتی لابنگ انسانی حقوق کی تنظیموں اور قومی عالمی ذرائع عالمی ابلاغ کو بھارت اور اس کی بدنام زمانہ افواج کے انسانیت سوز مظالم سے آگاہ کرنے کے لئے غیر ملکی سفراء کو دستاویزی شواہد فراہم کئے جائیں ۔

انہوں نے کہا کہ مقبوضہ کشمیر میں قیامت صغری ٰ کو برپاء ہوئے چالیس آیا م گزرنے کے باوجو د قومی کشمیر کمیٹی کے چیئر مین سید فخر اما م ، وزیر دفا ع پر ویز خٹک ، وزیر امو ر کشمیر علی امین گنڈا پورکی اپنے حکو متی فرائض سے مجر ما نہ غفلت بر تنے پر انہیں فو ری طو ر پر اپنے عہد و ں سے بر طر ف کر کے اہل فر ض شنا س ممبر ان قومی اسمبلی کو زمہ داریا ں دی جا نی نا گزیر ہو چکی ہیں۔

وزیر اعظم پا کستا ن کے جلسہ عا م کو کا میا ب بنا نے کے لئے فو ٹو سیشن اور پینا فلیکس کا مقا بلہ پو ری شد ت سے جا ری رہے البتہ چیف سیکر ٹر ی آزادکشمیر مطہر نیا ز رانا اپنا جا ند ار کر دار ادا نہ کر تے تو یو نیو رسٹی کا لج گر اونڈ میں پا نچ ہز ار کے جمع غفیر اور خا لی کر سیو ں سے خطا ب فر ما تے جس کا سا ر انقصا ن تحر یک کو ہو تا ، شو کت جا وید نے کہا کیا ہی مثا لی تا ریخی دورہ ہو تا اگراور نہتے عوام کو تا زہ اکسیجن فراہم ہو تی لیکن وزیر اعظم پا کستا ن نے سا ری زند گی سو لو فلا ئیٹ کی سیا ست کو فر وغ دے کر قومی اتحا د اتفا ق کو پا رہ پا رہ کیا، ان کے دامن پر مہر ثبت ہو چکی ہے کہ وہ تقسیم کشمیر کی عا لمی سا مرا جی سا زش میں پو ری طر ح شر یک ہیں، اس وقت بھا رت نو لا کھ فو ج کے ذریعے ریا ستی دہشت کر رہا ہے۔

اور روزانہ کی بنا پر خو ن ریزی کا تسلسل جا ری ہے، حریت کا نفر س کے سید علی گیلا نی ،میر واعظ عمر فاروق ،یاسین ملک، سید شبیر شاہ ، آسیہ اندرابی ، مسرت عالم بٹ سمیت جملہ قا ئد ین اور کارکنان کو تشدد کا نشانہ بنایا جارہا ہے ، ہزاروں کی تعداد میں آزادی پسندوں کو جیلوں میں ڈال دیا گیا ہے دنیا خاموش تماشائی کا کردار ادا کررہی ہے ، اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی میں خطاب سے قبل وزیراعظم پاکستان عمران خان کشمیری اور پاکستانی قیادت کو مدعو کرکے بہادر افواج پاکستان اور قومی سلامتی کے اداروں سے ملکر ایسی منصوبہ بندی کریں کہ بھارت پوری دنیا میںواویلا کرتا سنائی دے ، اس وقت مقبوضہ کشمیر کی تحریک اب یا کبھی نہیں کے فیصلہ کن مراحل میں داخل ہو چکی ہے یورپی یونین ، او آئی سی ، اقوام متحدہ نے بھی کوئی جاندار کردار ادا نہیں کیا ، جس کی وجہ سے دونوں ایٹمی ممالک کے درمیان کشیدگی عروج پر پہنچ چکی ہے اور کسی وقت بھی چنگاری ایٹمی شعلوں میں تبدیل ہو جائے گی اور پوری دنیا کا امن تہس نہس ہو جائے گا جس کی وجہ سے دو ارب انسانوں کی زندگیوں پر موت کے سائے منڈلانے شروع ہو جائیں گے لہذا پاکستان اور بھارت کے درمیان مسئلہ کشمیر کے دیرپا اور وقار حل کے لئے ثالثی کا کردار انتہائی لازم ہے بصورت دیگر تیسری نیوکلیئر وار کی تباہ کاریوں سے نمٹنے کے لئے دنیا تیار ہو جائے ۔

پاکستان کی شہہ رگ، کشمیر سے متعلق تازہ ترین معلومات