نامور شاعر ،ماہرتعلیم اور دانشور پروفیسر حسین سحر کی تیسری برسی 15ستمبر کومنائی جارہی ہے

ہفتہ ستمبر 13:32

ملتان (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - اے پی پی۔ 14 ستمبر2019ء) نامور شاعر ،ماہرتعلیم اور دانشور پروفیسر حسین سحر کی تیسری برسی 15ستمبر کومنائی جارہی ہے۔پروفیسر حسین سحر 10اکتوبر1942ء کوجلال آباد ضلع فیروز پور (بھارت)میں پیدا ہوئے۔ قیام پاکستان کے بعد پہلے قصور اور مارچ 1948ء میں ملتان آگئے۔انہوں نے عمربھر اسی شہر میں علم وادب کی خدمت کی۔پروفیسر حسین سحر نے اردو،پنجابی اور علوم اسلامیہ میں ایم اے کے علاوہ قانون کی ڈگری بھی حاصل کی۔

(جاری ہے)

انہوں نے لیکچرار کی حیثیت سے کیریئر کا آغاز کیا اور سول لائنز کالج ملتان اور ولایت حسین کالج سمیت مختلف اداروں میں خدمات انجام دیں۔ وہ پرنسپل کے عہدے سے ریٹائرمنٹ کے بعد سعودی عرب چلے گئے اورطویل عرصہ وہاں گزارا۔اردو اور پنجابی کے شعری مجموعوں ،تنقیدی مضامین سمیت مختلف موضوعات پر ان کی 30سے زیادہ کتب شائع ہوئیں۔ ان کا سب سے اہم کام قرآن پاک کا منظوم ترجمہ ہے جو’’ فرقان عظیم‘‘ کے نام سے شائع ہوا۔ حسین سحرکی خودنوشت ’’ شام وسحر‘‘ کے نام سے ان کی وفات کے بعد منظرعام پرآئی۔نعت و سیرت نگاری پر انہیں صدارتی ایوارڈ سے سمیت مختلف اعزازات سے نوازاگیا۔15ستمبر2016ء کو ملتان میں انتقال کرگئے ۔