پاکستان میں پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں 10 روپے فی لیٹر اضافے کا امکان

پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے کا امکان سعودی عرب کی تیل تنصیبات پر حملے کے پیش نظر کیا گیا

Sumaira Faqir Hussain سمیرا فقیرحسین پیر ستمبر 13:23

پاکستان میں پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں 10 روپے فی لیٹر اضافے کا امکان
اسلام آباد (اُردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار۔ 16 ستمبر 2019ء) : سعودی عرب میں تیل کی تنصیبات پر حملے کے پیش نظر پاکستان میں پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں دس روپے فی لیٹر اضافے کا امکان ظاہر کیا جا رہا ہے۔ اقتصادی ماہرین نے کہا کہ عالمی مارکیٹ میں تیل کی قیمتوں میں اضافے کا اثر پاکستان پر بھی پڑے گا جس کے تحت پاکستان میں پٹرول اور ڈیزل کی قیمتوں میں دس روپے فی لیٹر اضافے کا امکان ہے۔

سعودی عرب میں تیل تنصیبات پر حملے کے بعد عالمی مارکیٹ میں بھی تیل کی قیمتوں میں اضافہ ہوا۔ ویسٹ ٹیکساس انٹرمیڈیٹ کی قیمت 61 ڈالر فی بیرل ہو گئی ہے۔ جبکہ یورپی مارکیٹ میں برینٹ کروڈ آئل کی قیمت دوران ٹریڈنگ تیرہ فیصد اضافے کے بعد 68 ڈالر فی بیرل ہو گئی ہے۔ ایشیائی مارکیٹ میں بھی تیل کی قیمتوں میں دس فیصد اضافہ ریکارڈ کیا گیا۔

(جاری ہے)

خیال رہے کہ سعودی عرب میں تیل کے کنوؤں اور پلانٹس پر حملوں کے نتیجے میں تیل کی عالمی رسد میں پانچ فیصد کمی ہوگئی ہے جس کے باعث عالمی منڈی میں تیل کی قیمتیں چار ماہ کی بلند ترین سطح پر پہنچ گئی ہیں۔

امریکی میڈیا کے مطابق امریکی خام تیل کی قیمت میں 10.68 فیصداضافہ ہوگیا اور یورپی آئل مارکیٹوں میں برینٹ خام تیل 11.77فیصد مہنگا ہوگیا۔ تیل کی عالمی منڈی میں امریکی خام تیل ویسٹ ٹیکساس انٹرمیڈیٹ کی قیمت 60.71 ڈالر اور برینٹ کروڈ کے دام 67.31 ڈالر فی بیرل ہوگئے ہیں۔ سعودی عرب کا کہنا ہے کہ تنصیبات سے تیل کی رسد مکمل طور پر بحال ہونے میں کئی ہفتے لگ سکتے ہیں جس کے باعث اتنے ہی عرصے تک قیمتوں میں اضافہ برقرار رہنے کا خدشہ ہے۔

ماہرین معاشیات کے مطابق تیل کی قیمتوں میں ہونے والا حالیہ ہوشربا اضافہ دنیا کی معیشت پر نہایت منفی اثرات مرتب کرے گا اور کساد بازاری کا شکار عالمی معیشت مزید بحرانی کیفیت سے دوچار ہوجائے گی۔یاد رہے کہ ہفتے کے روز سعودی عرب میں تیل کی دو بڑی اور اہم تنصیبات پر ڈرون حملے ہوئے تھے جس کے نتیجے میں ان مقامات پر آگ لگ گئی اور کافی مالی نقصان ہوا تھا۔