اسرائیلی وزیراعظم کا انتخابات میں کامیابی کی صورت میں مغربی کنارے میں قائم تمام غیرقانونی یہودی بستیوں کو اسرائیل میں شامل کرنے کا اعلان

پیر ستمبر 14:09

اسرائیلی وزیراعظم کا انتخابات میں کامیابی کی صورت میں مغربی کنارے ..
مقبوضہ بیت المقدس (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - اے پی پی۔ 16 ستمبر2019ء) اسرائیلی وزیر اعظم بینجمن نیتن یاہو نے کل منگل کو ہونے والے انتخابات میں کامیابی کی صورت میںمغربی کنارے میں قائم تمام غیر قانونی یہودی بستیوں کو اسرائیل میں شامل کرنے کا اعلان کر دیا۔ چینی خبر رساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق انتخابات کے لئے پولنگ سے ایک دن قبل اسرائیلی آرمی ریڈیو کو انٹرویو میں انہوں نے کہا کہ وہ اسرائیلی تسلط کے دائرہ کار کو یہودی ورثہ کے حوالہ سے اہمیت رکھنے والے تمام مقامات، یہودی بستیوں اور تمام بلاکس تک توسیع دیں گے۔

(جاری ہے)

انہوں نے واضح طور پر کہا کہ فلسطینی شہر الخلیل کے پاس قائم کیریات اربا جیسی یہودی بستیاں اسرائیلی کا حصہ ہوں گی۔انہوں نے انکشاف کیا کہ انہوں نے امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کو اپنے اس منصوبے سے آگاہ کر دیا ہے اور امریکی صدر اسرائیلی انتخابات کے فوری بعد فلسطین و اسرائیل کے درمیان امن کا منصوبہ پیش کریںگے۔واضح رہے کہ اسرائیلی وزیر اعظم وادی اردن، بحیرہ مردار کے کچھ حصہ اور مغربی کنارے کے 22 فیصد حصے پر اسرائیلی قبضے کا اعلان کر چکے ہیں جس کی پوری عالمی برادری نے مذمت کی ہے۔اسرائیل نے 1967ء سے غزہ کی پٹی پر قبضہ کر رکھا ہے۔