Live Updates

" نوڈیل نو کمپرومائز"۔ وزیراعظم دو ٹوک موقف پر قائم

احتساب کا عمل جاری رہے گا۔ وزیراعظم عمران خان نے کسی بھی قسم کے ڈیل کے امکانات کو مسترد کر دیا

Muqadas Farooq مقدس فاروق اعوان پیر ستمبر 14:05

" نوڈیل نو کمپرومائز"۔ وزیراعظم دو ٹوک موقف پر قائم
اسلام آباد (اُردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار۔ 16 ستمبر 2019ء) : وزیراعظم عمران خان نے کسی بھی قسم کے ڈیل کے امکانات کو مسترد کر دیا ہے۔میڈیا رپورٹس میں بتایا گیا ہے کہ آج وزیراعظم عمران خان اور پی ٹی آئی رہنما بابر اعوان کے مابین ملاقات ہوئی ہے۔ملاقات میں وزیراعظم عمران خان نے ڈیل کی خبروں کو مسترد کرتے ہوئے کہا ہے کہ وہ" نوڈیل نو کمپرومائز" کے موقف پر قائم ہیں۔

وزیراعظم نے مزید کہا کہ احتساب کا عمل جاری رہے گا۔پہلی بار احتساب کا عمل سیاسی مداخلت سے آزاد ہے۔احتساب کا عمل شفاف اور بے لاگ ہے۔وزیراعظم نے مزید کہا کہ ساری توجہ کشمیر پر مرکوز ہے،جنرل اسمبلی میں خطاب اہم ہو گا،جب کہ بابر اعوان کا کہنا ہے کہ ڈیل کی باتیں کرنے والوں کو مایوسی ہو گی،مسئلہ کشمیر پر پاکستان کی کامیاب خارجہ پالیسی سے کشمیر کا مقدمہ دنیا میں سنا گیا۔

(جاری ہے)

خیال رہے کہ اس سے قبل وزیر داخلہ نے بھی نواز شریف اور آصف زرداری سے ڈیل ہونے کی خبروں کو مسترد کیا تھا،ان کا کہنا تھا کہ حکومت نواز شریف یا آصف زرداری سے کوئی ڈیل نہیں کر رہی۔پلی بارگین نیب کے قوانین میں شامل ہے جس کے تحت وہ کسی قسم بھی ڈیل کر سکتے ہیں۔خیال رہے کہ جہاں کچھ صحافیوں کی جانب سے یہ دعویٰ کیا جا رہا ہے کہ نواز شریف ڈیل کرنا چاہتے ہیں اور اس کے نتیجے میں وہ ملک سے باہر چلیں جائیں گے۔

وہیں کچھ صحافی اس بات کا دعویٰ بھی کر رہے ہیں کہ نواز شریف نے کسی بھی قسم کی ڈیل کرنے سے انکار کر دیا ہے۔ اس حوالے سے ،سینئر تجزیہ کار طلعت حسین نے کہا ہے کہ مسلم لیگ ن کے قائد اور سابق وزیراعظم نوازشریف نے مصالحتی فامورلہ مسترد کرکے ڈیل گروپ کو مشکل میں ڈال دیا، ڈیل کا فارمولہ یہ تھا کہ نوازشریف اور مریم نوازکو3،4 سال کیلئے ملک سے باہر جانا ہوگا، باقاعدہ دستخط شدہ تحریری دستاویز دینا ہوگی، نوازشریف فیملی کوسیاست سے کنارہ کشی اختیار کرنا ہوگی،بیرون ملک جانے سے قبل بھاری رقم باقاعدہ جمع کروا ئیں، یا لکھ کردیں کہ وہ اتنی رقم ادا کردیں گے۔
تنازعہ مقبوضہ کشمیر کی بھڑکتی ہوئی آگ سے متعلق تازہ ترین معلومات