سپریم کورٹ نے محکمہ اوقاف کی اراضی پر پیٹرول پمپ کی لیز کو غیر قانونی قرار دیدیا

لاہور ہائیکورٹ کا فیصلہ برقرارذاتی وجوہات کی بنیاد پر دائر درخواستیں بھی خارج کر دیں گئیں، عدالت عظمیٰ

پیر ستمبر 15:25

اسلام آباد (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - این این آئی۔ 16 ستمبر2019ء) سپریم کورٹ آف پاکستان نے محکمہ اوقاف کی اراضی پر پیٹرول پمپ کی لیز کو غیر قانونی قرار دیتے ہوئے کہاہے کہ لاہور ہائیکورٹ کا فیصلہ برقرارذاتی وجوہات کی بنیاد پر دائر درخواستیں بھی خارج کر دیں گئیں۔ سپریم کورٹ نے محکمہ اوقاف کی اراضی پیٹرول پمپ کی لیز سے متعلق فیصلہ سنا دیا۔

سولہ صفحات پر مشتمل فیصلہ جسٹس منصور علی شاہ نے تحریر کیا۔ جسٹس منظور ملک کی سربراہی میں تین رکنی بینچ نے فیصلہ سنایا۔

(جاری ہے)

سپریم کورٹ نے محکمہ اوقاف کی اراضی پر پیٹرول پمپ کی لیز کو غیر قانونی قرار دیتے ہوئے لاہور ہائیکورٹ کا فیصلہ برقرار رکھا جبکہ ذاتی وجوہات کی بنیاد پر دائر درخواستیں بھی خارج کر دیں گئیں۔ عدالت نے چیف ایڈمنسٹریٹر محکمہ اوقاف کو آئندہ قانون کے مطابق زمین لیز پر دینے کی ہدایت کر دی جبکہ ڈپٹی رجسٹرار سپریم کورٹ لاہور رجسٹری کو فیصلے کی کاپی ملک بھر کے چیف ایڈمنسٹریٹر اوقاف کو ارصال کرنے کی بھی ہدایت کر دی۔

چیف ایڈمنسٹریٹر محکمہ اوقاف نے چار کنال اراضی 30 سال کیلیے چار ہزار ماہانہ کرائے پر پیٹرول پمپ کو دی تھی جسے ہائیکورٹ نے لیز کو غیر قانونی قرار دیا تھا۔