راجن پور میں بے حیائی کی انتہا،ماں نے اپنی بیٹی کی شادی سوتیلے باپ سے کروا دی

اشرف اپنی 14 سالہ سوتیلی بیٹی کو متعدد بار جنسی زیادتی کا نشانہ بناتا رہا بیٹی کی جانب سے پردہ فاش کرنے پر ماں نے اس کا نکاح اپنے خاوند سے ہی پڑھوا دیا

پیر ستمبر 15:29

راجن پور میں بے حیائی کی انتہا،ماں نے اپنی بیٹی کی شادی سوتیلے باپ سے ..
راجن پور(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین،16ستمبر 2019ء ، نمائندہ خصوصی،عنصر سجاد) راجن پور میں حوا کی ایک اور کم سن بیٹی کے جنسی استحصال کا ایسا خوفناک واقعہ پیش آیا ہے، جسے سُن کر انسانیت لرز گئی ہے۔ تفصیلات کے مطابق راجن پور میں سوتیلے باپ نے اپنی کمسن بیٹی کے ساتھ زبر دستی نکاح کر لیا۔ بچی انصاف کے لیے پولیس اسٹیشن پہنچ گئی پولیس نے مقدمہ درج کر کے ملزم کو حوالات میں بند کر دیا ۔

یہ شرم ناک واقع سٹی تھانہ راجن پور کی حدودبسم اللہ کالونی میں پیش آیا جہاں اشرف نامی شخص نے اپنی 14سالہ سوتیلی بیٹی حنا ء سے زبر دستی نکاح کر لیا۔بیٹی انصاف کے لیے پولیس اسٹیشن پہنچ گئی۔ حنا ء نے بتایا کہ میں چھوٹی سی تھی جب میری والدہ کو طلاق ہوئی اور ہم راجن پور آ گئے تو میری والدہ نے اشرف نامی شخص سے شادی کر لی۔

(جاری ہے)

جب میں بڑی ہوئی تو میرا سوتیلا والد محمد اشرف میواتی میرے ساتھ میری مرضی کے خلاف کئی بار زنا کرتا رہا۔

میں نے اپنی والدہ کو بھی اس بارے میں بتایا مگر شروع شروع میں انہوں نے میری بات کا اعتبار نہ کیا۔ بعد میں میری والدہ نے مجھے اپنے سوتیلے والد محمد اشرف کے ساتھ نکاح کرنے کا مشورہ دیا جب میں نے انکار کیا تو میرا نکاح زبردستی 27 اگست 2019ء کو میرے سوتیلے والد اشرف میواتی سے کر دیا گیا۔ اس زبردستی کے نکاح کے بعد بھی محمد اشرف نے میرے ساتھ کئی بار زیادتی کی۔

میں نے تنگ آ کر اس بارے میں اہلِ علاقہ کو بتایا تو انہوں نے مجھے قانونی کارروائی کرنے کا مشورہ دیا۔ مجھے میری ماں نے ہر بار یہی کہا کہ اس بارے میں کسی کو بتانا نہیں۔ مجھے انصاف دلایا جائے میرے ساتھ بہت زیادتی ہوئی ہے۔

تھانہ سٹی نے مقدمہ درج کرتے ہوئے ملزم کو گرفتار کر لیا ہے تاہم پولیس کی جانب سے کی گئی ایف آئی آر میں اور کاغذات میں بھی تضاد ہے۔ لڑکی کی عمر ب فارم میں 14 سال جبکہ ایف آئی آر میں 19 سال لکھی گئی۔ لڑکی کے مطابق پولیس کے جانب سے لگائی جانے والی دفعات بھی مکمل ایف آئی آر کے مطابق نہیں۔