Live Updates

شہباز شریف نے مولانا فضل الرحمن کے ملین مارچ میں شرکت نہ کرنے کے لیے شرائط رکھ دیں

سال 2020 میں عام انتخابات کرائے جائیں،مسلم لیگ ن کے خلاف تمام مقدمات ختم کیے جائیں اور کوئی پلی بارگین نہیں ہوگی۔شہباز شریف کا مطالبہ

Muqadas Farooq مقدس فاروق اعوان منگل ستمبر 11:03

شہباز شریف نے مولانا فضل الرحمن کے ملین مارچ میں شرکت نہ کرنے کے لیے ..
لاہور ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 17 ستمبر2019ء) سینئر صحافی و تجزیہ نگار عارف حمید بھٹی کا کہنا ہے کہ اپوزیشن لیڈر شہباز شریف نے مولانا فضل الرحمن کے ساتھ احتجاج میں شامل نہ ہونے کی شرائط رکھ دیں ہیں۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ جے یو آئی ایف کے سربراہ مولانا فضل الرحمن سے ملاقات کر کے جب اپوزیشن لیڈر شہباز شریف روانہ ہوئے تو جاتی امرا سے فون آیا جس سے شہباز شریف نے مولانا فضل الرحمن کی ملین مارچ میں شریک نہ ہونے کے لئے شرائط رکھ دی شرط کا ذکر کرتے ہوئے عارف حمید بھٹی نے کہا کہ شہباز شریف نے پہلا مطالبہ کیا ہے کہ سال 2020 میں عام انتخابات کرائے جائیں۔

دوسرا مطالبہ یہ کہ مسلم لیگ ن کے خلاف تمام مقدمات ختم کیے جائیں اور کوئی پلی بارگین نہیں ہوگی۔خیال رہے کہ ے یو آئی ایف کے سربراہ مولانا فضل الرحمن مرکزی حکومت کے خاتمے کے لیے آئندہ ماہ تنہا اسلام آباد کی جانب مارچ اور قیام کرنے کے اپنے ارادے کو عملی جامہ پہنانے کے لیے پر عزم ہیں۔

(جاری ہے)

اس حوالے سے میڈیا رپورٹس میں بتایا گیا ہے کہ احتجاجی مارچ اور دھرنے کے لیے فنڈز کا حدف 20 کروڑ روپے مقرر کیا گیا ہے۔

مارچ کا آغاز سندھ سے کیے جانے کا امکان ہے تاہم اس کا حتمی فیصلہ مولانا فضل الرحمن کی طرف سے کیا جائے گا۔بتایا گیا ہے کہ جے یو آئی کو کے امیر کو سندھ تنظیم کی جانب سے سکھر سندھ سے مارچ کے آغاز کی پیشکش کی گئی ہے۔جے یو آئی کا خیال ہے کہ سندھ میں اسلام آباد کی جانب سے مارچ کے آغاز پر پیپلز پارٹی کی سندھ حکومت کی جانب سے کوئی رکاوٹ نہیں ڈالی جائے گی اور اس طریقے سے مارچ کا ٹیمپو بن جائے گا۔

جے یو آئی کے امیر کی قیادت میں سندھ سے مارچ کے آغاز کی صورت میں پنجاب کے ضلع رحیم یار خان پہنچے پر بلوچستان سے قافلے پہنچ جائیں گے۔اور اسلام آباد کی جانب مارچ میں خاطر خواہ افرادی قوت ہو گی۔جسے انتظامی طور پر روکنا پی ٹی آئی حکومت کے لیے ناممکن ہو گا،جے یو آئی ذرائع نے مزید بتایا ہے کہ جے یو آئی کے بنیادی ارکان کی تعداد اس وقت دو ملین سے زائد ہے۔ ہر رکن کو 100 روپے مارچ فنڈ میں جمع کرانے کی ہدایت کی گئی ہے جس سے کم از کم 20کروڑ روپے اکٹھے ہوں گے۔
مولانا فضل الرحمان کا آزادی مارچ کا اعلان سے متعلق تازہ ترین معلومات