Live Updates

آصف زرداری سے اڈیالہ جیل میں بلاول بھٹو آصفہ بھٹو زرداری ،لطیف کھوسہ، سینیٹر مصطفی نواز کی ملاقات

سابق صدر کو قید تنہائی میں رکھا جا رہا ہے،عدالتی احکامات کے باوجود ملاقات کرنے میں رکاوٹیں پیدا کی جا رہی ہیں،مصطفی نواز کھوکھر معیشت تباہ ،بیروزگاری بڑھ رہی ہے، پاکستان کو اس وقت سنجیدہ قیادت کی ضرورت ہے، حکومت مزید رہی تو ملک کیلئے نقصان دہ ہوگی، میڈیا سے گفتگو

منگل ستمبر 23:55

آصف زرداری سے اڈیالہ جیل میں بلاول بھٹو آصفہ بھٹو زرداری ،لطیف کھوسہ، ..
اسلام آباد (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - این این آئی۔ 17 ستمبر2019ء) سابق صدر پاکستان آصف علی زرداری سے اڈیالہ جیل میں بلاول بھٹو زرداری، آصفہ بھٹو زرداری ان کے وکلاء سردار لطیف کھوسہ، سینیٹر مصطفی نواز کھوکھر اور شائستہ کھوسہ نے ملاقات کی۔ ملاقات کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے چیئرمین پیپلزپارٹی بلاول بھٹو زرداری کے ترجمان سینیٹر مصطفی نواز کھوکھر نے کہا کہ عدالتی احکامات کے باوجود ملاقات کرنے میں رکاوٹیں پیدا کی جا رہی ہیں۔

سابق صدر کو قید تنہائی میں رکھا جا رہا ہے۔ حکومت اپوزیشن کے اوپر جتنا بھی جبر کرے پیپلزپارٹی اپنے موقف پر قائم رہے گی۔ انہوں نے کہا کہ بی بی آصفہ بھٹو کو عدالتی احکامات کے باوجود اپنے والد سے ہسپتال میں ملاقات کرنے کی اجازت نہیں دی گئی۔

(جاری ہے)

مصطفی نواز کھوکھر نے کہا کہ پیپلزپارٹی کی کور کمیٹی مولانا فضل الرحمن کے دھرنے کے حوالے سے مشاورت کرے گی۔

پیپلزپارٹی کی کور کمیٹی کا اجلاس کل شام سات بجے زرداری ہائوس اسلام آباد میں ہوگا۔ سینیٹر مصطفی نواز کھوکھر نے کہا کہ چیئرمین پیپلزپارٹی نے حکومت کو دسمبر تک ڈیڈ لائن دی ہے کیونکہ حکومت ہر شعبہ میں ناکام ہو چکی ہے۔ پارٹی کے کل کے اجلاس میں غوروخوض کے بعد آئندہ کا لائحہ عمل طے کیا جائے گا۔ ایک سوال کے جواب میں کہ نیشنل گورنمنٹ کے حوالے سے اسلام آباد میں قیاس آرائیاں ہو رہی ہیں مصطفی نواز کھوکھر نے کہا کہ وقت ثابت کرے گا کہ ان قیاس آرائیوں میں کتنی صداقت ہے بہرحال اس حکومت سے جان چھڑوانے کے لئے ہم دوسری پارٹیوں سے مشاورت کر رہے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ معیشت تباہ ہوگئی ہے، بیروزگاری بڑھ رہی ہے، پاکستان کو اس وقت سنجیدہ قیادت کی ضرورت ہے۔ حکومت مزید رہی تو ملک کیلئے نقصان دہ ہوگی۔ اس موقع پر آصف علی زرداری کے وکیل سردار لطیف کھوسہ نے کہا کہ روزانہ عدالت ہمیں مقدمات کے بنڈل تھما دیتی ہے۔ وکلاء کی ملاقات قانونی مشاورت کے لئے ہوتی ہے۔ آج بھی ہم سابق صدر سے ضمانت کی درخواست دائر کرنے کی بات کی مگر سابق صدر نے کہا کہ آپ کو کس بات کی جلدی ہے۔ حکومت جتنا ظلم کرنا چاہتی ہے کر لے۔ سردار لطیف کھوسہ نے کہا کہ ایک بھی ایسا کیس نہیں کہ صدر زرداری کا براہ راست لنک ہو۔ سابق صدر 68دن نیب کی حراست میں رہے مگر کچھ نہیں نکلا۔
مولانا فضل الرحمان کا آزادی مارچ کا اعلان سے متعلق تازہ ترین معلومات