پاکستان میں آئی ٹی سیکٹر میں سرمایہ کاری کرنے کے بہترین مواقع موجو ہیں،گورنرسندھ

آئی ٹی سی ایس ایشیا ایک ایسا پلیٹ فارم فراہم کررہاہے جس سے ملک آئی ٹی سیکٹر میں با لخصوص ترقی کررہا ہے،تقریب سے خطاب

بدھ ستمبر 18:30

پاکستان میں آئی ٹی سیکٹر میں سرمایہ کاری کرنے کے بہترین مواقع موجو ..
کراچی (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - این این آئی۔ 18 ستمبر2019ء) گورنرسندھ عمران اسماعیل نے کہا ہے کہ پاکستان میں آئی ٹی سیکٹر میں سرمایہ کاری کرنے کے بہترین مواقع موجو ہیں اس ضمن میں موجودہ حکومت با صلاحیت نوجوانوں کی حوصلا افزائی کرنے کے لئے ان کو آسان شرائط پر قرضہ فراہم کرنے کے ساتھ ساتھ ان کی مہارت کو مزید اجاگر کرنے کے لئے سہولیات بھی فراہم کررہی ہے ۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے آئی ٹی سی این میں منعقدہ کانفرنس باعنوان آئی ٹی مینسٹرز فورم فار یوتھ ، انویشن(Innovation )، انڈسٹری اور ایز آف ڈوئنگ بزنس کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔ گورنرسندھ نے کہ آئی ٹی سیکٹر کے زریعے ملکی درآمدات کو دوگنا ہ کرنے کی گنجائش موجود ہے اس ضمن میں وزیراعظم پاکستان نے خصوصی ٹاسک آئی ٹی منسٹر کو دیا ہے جس کے تحت حکومت پاکستان کی ہر ممکن کوشش ہے کہ وہ ان نوجوانوں جن کے پاس آئی ٹی کے حوالے سے جدید تجویز ہیں ان کو ہر ممکن معاونت فراہم کی جائے ۔

(جاری ہے)

انہوں نے کہا کہ آئی ٹی سی ایس ایشیا ایک ایسا پلیٹ فارم فراہم کررہاہے جس سے ملک آئی ٹی سیکٹر میں با لخصوص ترقی کررہا ہے ۔ اس وقت پاکستان میں سرمایہ کاری کرنے کا ماحول ہمارے ہماسائیوں سے زیادہ پر کشش ہے ۔ انہوں نے کہا کہ بورڈ آف انویسٹمنٹ کے تحت سرمایہ کاری کرنے والوں کو ون ونڈو آپریشن کی سہولیات کے ساتھ ساتھ دیگر کئی مراعات د ی جارہی ہیں ۔

پاکستان میں کم لاگت پر تجربہ کار اور ہنر مند افرادی قوت سے استفادہ حاصل کیا جا سکتا ہے جو کہ کسی بھی کاروباری کے لئے مفید ثابت ہوتا ہے ۔ انہوں نے صنعتکاروں اورسرمایہ داروں سے کہا کہ پاکستان ایک ابھرتی ہوئی معیشت ہے جہاں سرمایہ کاری کرنے کے لئے آج بہترین مواقع میسر ہیں ضرورت اس بات کی ہے کہ دنیا یہ جان لے کہ پر امن پاکستان سرمایہ کاروں کے لئے جنت ہے ۔

میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے گورنرسندھ نے کہا کہ قائد اعظم کے وژن کے مطابق پاکستان میں اقلیتی برادری کو یکساں حقوق حاصل ہیں ان کو اپنی مذہبی رسومات کی ادائیگی میں مکمل آزادی ہے سندھ میں صحت ،صفائی اور دیگر مسائل کے بارے میں کئے گئے ایک سوال پر گورنرسندھ نے کہا کہ عوام کو زندگی کی بنیادی سہولیات پہچاناحکومت کی اولین ذمہ داری ہے جبکہ سندھ میں بنیادی سہولیات کی عدم فراہمی سے عوم پریشان ہے ۔

انہوںنے کہا کہ حادثے دنیا میں ہر جگہ رونما ہوتے ہیں مگر ضرورت اس امر کی ہے کہ ان سے نمٹنے کا موثرنظام ہونا چاہئے بدقسمتی سے سندھ میں صحت کی سہولیات عام آدمی کو میسر نہیں جبکہ حکومت سندھ کے زیر انتظام چلنے والے اسپتال ایسا منظرپیش کرتے ہیں کہ یقین نہیں آتا کہ یہاں انسانوں کا علاج کیا جاتا ہے ، انہوں نے مزید کہا کہ وزیر اعلیٰ سندھ تما م چیزوں سے واقف ہیں ان کی ترجیحات کیا ہے اس پر ان سے بات کروں گا اگر ان کو وفاقی حکومت کی مدد درکار ہے تو میں یقین دلاتاہوں کہ بھرپور تعاون فراہم کیا جائے گا ، سندھ حکومت کی جانب سے کراچی کا کچرا اٹھانے کی مہم کے بارے میں کئے گئے سوال پر گورنرسندھ نے کہا کہ اس ضمن میں ہر ممکن مدد اور تعاون کی بھی یقین دہانی کروائی ۔

اس سے قبل وفاقی وزیر انفارمیشن ٹیکنالوجی ڈاکٹرخالد مقبول نے بھی کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے اپنی وزارت کی جانب سے کئے گئے اقدامات پر روشنی ڈالی ۔