ڈاکٹر یاسمین راشد کو ڈینگی کے ہزاروں مریض سامنے آنے کے بعد ہوش آئی ہے‘ مسلم لیگ (ن)

جب ڈینگی کا لاروا بننے کا وقت تھا اس وقت حکومت سو رہی تھی،غریب مریضوں کی بدعائیں حکومت کے خاتمے کا سبب بنیں گی ‘عظمی بخاری

بدھ ستمبر 20:19

ڈاکٹر یاسمین راشد کو ڈینگی کے ہزاروں مریض سامنے آنے کے بعد ہوش آئی ہے‘ ..
لاہور(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - این این آئی۔ 18 ستمبر2019ء) مسلم لیگ(ن) پنجاب کی سیکرٹری اطلاعات عظمی بخاری نے کہا ہے کہ ڈاکٹر یاسمین راشد کو ڈینگی کے ہزاروں مریض سامنے آنے کے بعد ہوش آئی ہے،پہلے وزیر صحت پنجاب میں ڈینگی کی دوبارہ موجودگی تسلیم کرنے کو تیار نہیں تھیں۔ یاسمین راشد کی پریس کانفرنس پر اپنے رد عمل میں عظمی بخاری نے کہا کہ وزیر صحت پنجاب ایک ماہ قبل اپنے لیڈر کی طرح نتھی گلی کی پہاڑیوں پر سیر کرنے چلی گئی تھیں،جب ڈینگی کا لاروا بننے کا وقت تھا اس وقت پنجاب حکومت سو رہی تھی۔

(جاری ہے)

آج پنجاب میں ڈینگی کے ہزاروں مریض سامنے آنے کے بعد وزیر اعلی اور وزیر صحت کی آنکھ کھلی ہے۔ ڈاکٹر یاسمین راشد آپا زبیدہ بن کر ٹوٹکے بتانے کی بجائے ڈینگی جیسی جان لیوا بیماری کو سنجیدہ لیں۔عمران خان کی ایماء پرپنجاب کے سرکاری ہسپتالوں میں مفت ادویات اور مفت ٹیسٹ کی سہولت ختم کی گئی ہے۔آج پنجاب میں کینسر کے مریض بھی مفت ادویات بند ہونے پر احتجاج کررہے ہیں۔عمران خان غریب عوام کے ساتھ ساتھ مریضوں کی بھی بددعائیں لے رہے ہیں۔موجودہ حکومت کا ایجنڈا غریب مکا ئواور سرمایہ کاری بھگا ئوہے۔غریب مریضوں کی بددعائیں اس حکومت کے خاتمے کا سبب بنیں گی۔