گھوٹکی،اوباڑو میں اقلیتی برادری کی بی ڈی ایس کی طالبہ ڈاکٹر نمرتا کی پراسرار ہلاکت کے خلاف احتجاجی ریلی نکالی گئی

جمعرات ستمبر 18:18

گھوٹکی ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - اے پی پی۔ 19 ستمبر2019ء) اوباڑو میں اقلیتی برادری کی بی ڈی ایس کی طالبہ ڈاکٹر نمرتا کی پراسرار ہلاکت کے خلاف احتجاجی ریلی نکالی گئی، ریلی سول سوسائٹی، سیاسی سماجی رہنماوں، ڈاکٹرز، تاجر برادری سمیت شہریوں کی بہت بڑی تعداد نے شرکت کی۔ ریلی میلاد چوک سے نکالی گئی جو مین چوک سے ہوتی ہوئی پریس کلب تک پہنچی۔

ریلی کے شرکاء نے ہاتھوں میں پینافلیکس اٹھا رکھے جس پر نمرتا ہلاکت اور انصاف کی فراہمی کے نعرے درج تھے۔

(جاری ہے)

اس موقع پر ریلی کے شرکاء مکھی درم داس، ڈاکٹر ونود، ڈاکٹر بند لال و دیگر نے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ ڈاکٹر نمرتا سندھ کی بیٹی تھی جسے گلہ دبا کر قتل کیا گیا ہے۔ ڈاکٹر نمرتا کی ابتدائی رپورٹ سے اقلیتی برادری مطمئن نہیں وہ کسی کے حکم پر بنائی گئی ہے۔ ریلی کے شرکاء نے وائس چانسلر ڈاکٹر انیلہ کے رویہ اور صحافی کو تھپڑ مارنے کی مذمت کرتے ہوئے فوری ہٹانے کا مطالبہ کیا۔ مظاہرین ایس ایس پی لاڑکانہ پر اطمینان کا اظہار کرتے ہوئے انصاف کی فراہمی کا مطالبہ کیا، اور وزیر اعظم پاکستان، چیف جسٹس اور آرمی چیف سے واقعے کی شفاف تحقیقات کا مطالبہ کیا۔