لاہور کے کشمیر اںڈر پاس کا نام پھر سے صحافی حامد میر کے والد سے منسوب کرنے کی ہدایت

اسپیکر پنجاب اسمبلی پرویز الہیٰ نے وزیر قانون راجہ بشارت کو انڈر پاس کا نام دوبارہ وارث میر انڈر پاس رکھنے کے حوالے سے کارروائی کرنے کی ہدایت کر دی

muhammad ali محمد علی جمعہ ستمبر 21:33

لاہور کے کشمیر اںڈر پاس کا نام پھر سے صحافی حامد میر کے والد سے منسوب ..
لاہور (اردوپوائنٹ اخبارتازہ ترین۔20 ستمبر2019ء) لاہور کے کشمیر اںڈر پاس کا نام پھر سے صحافی حامد میر کے والد سے منسوب کرنے کی ہدایت، اسپیکر پنجاب اسمبلی پرویز الہیٰ نے وزیر قانون راجہ بشارت کو انڈر پاس کا نام دوبارہ وارث میر انڈر پاس رکھنے کے حوالے سے کارروائی کرنے کی ہدایت کر دی۔ تفصیلات کے مطابق پنجاب کے دارالحکومت لاہور کی مصروف ترین شاہراہ کینال روڈ کے کشمیر انڈر پاس کا نام پھر سے تبدیل کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

پنجاب اسمبلی اجلاس کے دوران مسلم لیگ ن سے تعلق رکھنے والے رکن اسمبلی خلیل طاہر سندھو نے لاہور شہر کی مسروف ترین شاہراہ کینال روڈ کے پروفیسر وارث میر انڈر پاس کا نام تبدیل کرنے کے حکومتی فیصلے کی شدید مذمت کی۔ ن لیگ کے رکن اسمبلی نے سپیکر پنجاب اسمبلی سے مطالبہ کیا کہ پروفیسر وارث میر کی پاکستان کے لئے خدمات کے پیش نظر اس فیصلے کو واپس لیا جائے اور نیو کیمپس انڈر پاس کا نام دوبارہ وارث میر انڈرپاس کیا جائے۔

(جاری ہے)

اس مطالبے پر اسپیکر پنجاب اسمبلی چودھری پرویز الہی نے خلیل طاہر سندھو کی تجویز سے اتفاق کرتے ہوئے وزیر قانون راجہ بشارت کو ہدایت کی کہ وہ اس معاملے کو خود دیکھیں اور کینال روڈ کے انڈر پاس کا نام دوبارہ وارث میر انڈر پاس رکھنے کے حوالے سے ضروری کارروائی کریں۔ واضح رہے کہ گزشتہ ماہ حکومت پنجاب کے احکامات پر سٹی ڈسٹرکٹ گورنمنٹ لاہورنے شہر کی مصروف ترین شاہراہ کینال روڈ پر واقع پروفیسر وارث میر انڈرپاس کا نام راتوں رات تبدیل کردیا تھا اور نیا نام کشمیر انڈر پاس رکھا دیا گیا تھا۔

حکومت کے اس فیصلے کو مختلف انسانی حقوق کی تنظیموں، مذہبی جماعتوں، صحافیوں اور کالم نگاروں کی بڑی تعداد نے تنقید کا نشانہ بنایا تھا۔ جبکہ اب دوبارہ اس انڈر پاس کا نام وارث میر سے منسوب کرنے کی ہدایت کر دی گئی ہے۔