Live Updates

’’بہت سے ممالک کے سربراہان مجھ سے ملنا چاہتے تھے لیکن میں نے عمران خان کا انتخاب کیا‘‘: ڈونلڈ ٹرمپ

عمران خان اچھے لیڈر اور دوست ہیں، پاکستان کے پاس ایک عظیم رہنما ہے جو اچھا کھلاڑی بھی ہے: امریکی صدر کی میڈیا سے گفتگو

Usman Khadim Kamboh عثمان خادم کمبوہ پیر ستمبر 23:11

’’بہت سے ممالک کے سربراہان مجھ سے ملنا چاہتے تھے لیکن میں نے عمران ..
واشنگٹن (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 22 ستمبر2019ء) امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے وزیراعظم عمران خان کے ہمراہ میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ بہت سے ممالک کے سربراہان ان سے ملنا چاہتے تھے لیکن انہوں نے عمران خان کا انتخاب کیا۔ ڈونلڈ ترمپ نے وزیراعظم عمران خان کی تعریف کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان نے عمران خان کی قیادت دہشتگردی کے خلاف جنگ میں کامیابی حاصل کی، عمران خان اچھے لیڈر اور دوست ہیں۔

امریکی صدر نے کہا کہ عمران خان پاکستان کے عظیم لیڈر ہیں اور وہ خطے کی ترقی چاہتے ہیں، پاکستان کے ساتھ کئی معاملات پر بات چیت جاری ہے، پاکستان سے تجارت کا حجم بڑھانا چاہتے ہیں، عمران خان اور مودی کہیں تو کشمیر پر ثالثی کے لیے اب بھی تیار ہوں۔ انہوں نے کہا کہ مجھے پاکستان اور عمران خان پر اعتماد ہے، عمران خان بہترین وزیراعظم ہیں۔

(جاری ہے)

پاکستان کے پاس ایک عظیم رہنما ہے جو اچھا کھلاڑی بھی ہے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان کو بہت سے چیلنجز کا سامنا ہے۔ کل بھارتی وزیراعظم نے بہت جارحانہ زبان استعمال کی، پاکستان تیار ہے لیکن دوسری طرف بھی ثالثی کی پیشکش قبول کرے تو تب ہی میں ثالثی کروا سکتا ہوں۔اس ملاقات کے دوران امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے بھارتی وزیراعظم نریندر مودی کو تنقید کا نشانہ بنایا۔

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے کہا کہ گزشتہ روز ہوسٹن جلسے میں بھارتی وزیراعظم نریندر مودی نے کافی جارحانہ زبان کا استعمال کیا۔ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے ایک مرتبہ پھر مسئلہ کشمیر کے حل کیلئے پاکستان اور بھارت کے درمیان ثالثی کروانے کی پیش کش کی۔تاہم اس موقع پر یہ بھی کہا کہ پاکستان تو امریکا کی ثالثی کیلئے تیار ہے، لیکن بھارت اس سے انکار کر رہا ہے۔

تفصیلات کے مطابق وزیراعظم عمران خان اور امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے درمیان ملاقات ہوئی ہے۔ دونوں ممالک کے سربراہان کے درمیان ملاقات امریکی دارالحکومت واشنگٹن میں ہوئی ہے۔ امریکی صدر نے کہا کہ وزیراعظم عمران خان اور بھارتی وزیراعظم سے بہت اچھے تعلقات ہیں تاہم جب تک بھارت بھی راضی نہیں ہوتا، تب تک وہ عملی طور پر ثالثی کا کردار نہیں ادا کر سکتے۔ ڈونلڈ ٹرمپ نے مزید کہا کہ مجھ سے پہلےامریکی قیادت نے پاکستان سے اچھا سلوک نہیں کیا۔
تنازعہ مقبوضہ کشمیر کی بھڑکتی ہوئی آگ سے متعلق تازہ ترین معلومات