اسلام آباد ہائیکورٹ، عرفان صدیقی کی دائر گئی اخراج مقدمہ کی پٹیشن باقاعدہ سماعت کے لئے منظور

ڈسٹرکٹ مجسٹریٹ اسلام آباد اور تھانہ رمنا کے ایس ایچ او کو نوٹسز جاری کرنے کا حکم

جمعرات اکتوبر 22:50

اسلام آباد (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - آن لائن۔ 03 اکتوبر2019ء) اسلام آباد ہائیکورٹ کے جج جسٹس عامر فاروق نے معروف صحافی اور سابق وزیراعظم میاں نواز شریف کے مشیر عرفان صدیقی کی طرف سے دائر کی گئی اخراج مقدمہ کی پٹیشن باقاعدہ سماعت کے لئے منظور کرتے ہوئے ڈسٹرکٹ مجسٹریٹ اسلام آباد اور تھانہ رمنا کے ایس ایچ او کو نوٹسز جاری کرنے کا حکم دیا۔

مقدمے کی سماعت کے دوران فاضل جج نے استفسار کیا کہ اب تک پولیس نے کیا کارروائی کی ہے۔ عرفان صدیقی کے وکیل تنویر اقبال نے معزز عدالت کو بتایا کہ پولیس کی طرف سے اب تک کوئی کارروائی نہیں کی گئی۔ نہ چالان پیش کیا گیا اور نہ ہی مقدمہ خارج کیا گیا۔ جسٹس عامر فاروق کے استفسار پر وکیل نے بتایا کہ پوری کوشش کے باوجود ہمیں ابھی تک ضمانت کے فیصلے کی کاپی بھی نہیں ملی۔

(جاری ہے)

تنویر احمد نے عدالت کو بتایا کہ یہ ایف آئی آر مکمل طور پر جھوٹی اور بے بنیاد ہے۔ ایف آئی آر میں ڈپٹی کمشنر کے جس حکم نامے کا نمبر دیا گیا ہے اس کی میعاد 16 جولائی کو ختم ہو گئی تھی۔ فاضل وکیل کی معروضات سننے کے بعد جسٹس عامر فاروق نے ڈسٹرکٹ مجسٹریٹ اور تھانہ رمنا کے ایس ایچ او کو نوٹسز جاری کرنے کا حکم دیا کہ وہ پندرہ دن کے اندر عدالت میں جواب جمع کروائیں کی سماعت بائیس اکتوبر تک ملتوی کردی گئی۔