جیکب آباد: جمس ہسپتال میں تین سال سے امراض چشم کا شعبہ غیر فعال

ادھار کا ڈاکٹر ہفتے میں ایک دن آکر صرف او پی ڈی کرتا ہے آپریشن نہیں ہوتے مریضوں کی شکایات

ہفتہ نومبر 21:51

جیکب آباد(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - آن لائن۔ 09 نومبر2019ء) جیکب آباد کی جمس ہسپتال میں تین سال سے امراض چشم کا شعبہ غیر فعال ‘ادھار کا ڈاکٹر ہفتے میں ایک دن آکر صرف او پی ڈی کرتا ہے آپریشن نہیں ہوتے مریضوں کی شکایات ، تفصیلات کے مطابق جیکب آباد جمس اسپتال میں تین سال سے امراض چشم کا شعبہ تین سال سے غیر فعال ہے سابق ڈائریکٹر جمس رٹائربرگیڈئر زبیر شیخ کے دور میں امراض چشم کے ڈاکٹر ہاشم قریشی نے شعبہ کو فعال کیا انکی رٹائرمنٹ کے بعد یہ شعبہ جیسے جمس میں بند ہو گیا ہے محکمہ صحت کا ادھار کا ڈاکٹر ہفتے میں ایک دن جمس آکر صرف مریضوں کی او پی ڈی کرتا ہے جمس میںامراض چشم کے مریضوں کے آپریشن نہیں ہوتے کیونکہ جمس میںنہ ہی فیکو مشین ہے اور نہ ہی مائیکرو اسکوپ جس پر دور دراز سے آنے والے مریضوں مسمات خیران ‘صدوری‘قمبر علی‘ندیم اور دیگر نے احتجاج کرتے ہوئے کہا کہ یو ایس ایڈ کے تحفے جمس کو تباہ کردیا گیا ہے اسکا اتنا نام سن کر آئے پر کروڑوں کی بجٹ رکھنے والے اس بڑے ادارے میں امراض چشم کا ماہر ڈاکٹر تک موجود نہیں ہے افسوس کی بات ہے ہمیں شدید مایوسی ہوئی ہے ہفتے میں ایک بار آنے والا ڈاکٹر صرف دو گھنٹے خانہ پوری کرکے واپس چلا جا تا ہے وزیر اعلی سندھ اور ایم این اے ایم پی اے اسکا نوٹس لیں۔