وزیراعلیٰ پنجاب کا غیر مسلم ملازمین کا ڈیٹا مرتب کرنے کا حکم

یوحنا آباد کو 30 کروڑ روپے لاگت سے ماڈل ایریا بنایا جائیگا،فیصلہ ان کے حقوق کے تحفظ کو یقینی بنانے کیلئے کیا گیا ،غیر مسلم طلبا کو ڈھائی کروڑ روپے تعلیمی وظائف دیے جائیں گے،غیر مسلم ریسرچ اسکالرز اور پوسٹ گریجویٹ طلبا میں ڈھائی کروڑ روپے کی ایک اور رقم تقسیم کی جائیگی:وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار عثمان بزدار سے ڈاکٹر شعیب سڈل کی ملاقات؛اقلیتوں کے مسائل فوری حل کرنے کیلئے صوبائی فوکل پرسن بھرتی کرنے کی بھی ہدایت Kپولیس گرجا گھروں کی سیکیورٹی چیک کریں

ہفتہ نومبر 22:53

وزیراعلیٰ پنجاب کا غیر مسلم ملازمین کا ڈیٹا مرتب کرنے کا حکم
لاہور(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - آن لائن۔ 16 نومبر2019ء) وزیر اعلیٰ عثمان بزدار نے متعلقہ حکام کو صوبہ بھر میں غیر مسلم ملازمین کا ڈیٹا مرتب کرنے کی ہدایت کردی تاکہ ان کے حقوق کے تحفظ کو یقینی بنایا جاسکے۔وزیراعلیٰ نے مذکورہ ہدایت ڈاکٹر شعیب سڈل کی زیرصدارت اقلیتی حقوق کے قومی کمیشن کے وفد سے ملاقات میں دی۔اجلاس میں اقلیتوں کی فلاح و بہبود سے متعلق سہولیات کی فراہمی اور امور پر تبادلہ خیال کیا گیا۔

عمثان بزدار نے کہا کہ اقلیتوں کے حقوق کے تحفظ کے لیے پنجاب کو ایک ماڈل بنایا جارہا ہے اور 'پنجاب اقلیتی بااختیار پیکیج' اقلیتوں کی بہبود کے حوالے سے ایک مثالی پروگرام ثابت ہوگا۔انہوں نے کہا کہ یوحنا آباد کو 30 کروڑ روپے کی لاگت سے ماڈل ایریا بنایا جائے گا۔

(جاری ہے)

وزیراعلیٰ نے اقلیتوں کے مسائل کے بروقت حل کے لیے ایک صوبائی فوکل پرسن کی تقرری کی ہدایت کی۔

انہوں نے کہا کہ اقلیتی برادری سے تعلق رکھنے والے ملازمین کو ان کے مذہبی تہوار پر سرکاری تعطیلات دی جائیں۔عثمان بزدار نے کہا کہ غیر مسلم طلبا کو ڈھائی کروڑ روپے کی تعلیمی وظائف دیے جائیں گے۔علاوہ ازیں انہوں نے کہا کہ ڈھائی کروڑ روپے کی ایک اور رقم غیر مسلم ریسرچ اسکالرز اور پوسٹ گریجویٹ طلبا میں بطور اسکالرشپ تقسیم کی جائے گی۔

عثمان بزدار نے غیر مسلم طلبا کو اپنے مذہبی تہواروں اور تقاریب کے دوران مسابقتی امتحانات میں شرکت سے مستثنیٰ کرنے کی تجویز کے بارے میں بھی بات کی۔انہوں نے کہا کہ صوبے میں اقلیتوں کے لیے مختص اراضی واگزار کرائی جائے گی اور ساتھ ہی عثمان بزدار نے پولیس افسران سے کہا کہ وہ ذاتی طور پر گرجا گھروں کی سیکیورٹی چیک کریں۔ڈاکٹر شعیب سڈل نے وزیراعلیٰ عثمان بزدار کمیشن کے مقاصد سے آگاہ کیا اور مزید کہا کہ پنجاب غیر مسلم برادریوں کو حقوق کے تحفظ اور سہولیات کی فراہمی کے سلسلے میں ایک ماڈل کے طور پر ابھرے گا۔