مولانا کا دھرنے میں کارٹون سے زیادہ کردارنظر نہیں آیا، اعتزازاحسن

دھرنے میں ان کے ساتھ تین اضلاع کے پٹھان تھے، مولانا نے 14ہزار بندے لاکرکہا کہ میں حکومت تبدیل کروں گا، ہم مذہب کارڈ استعمال کرنے کے خلاف تھے، ہم دھرنے میں شامل نہیں ہوئے۔ پیپلزپارٹی کے سینئر مرکزی رہنماء اعتزازاحسن کی گفتگو

sanaullah nagra ثنااللہ ناگرہ اتوار دسمبر 22:27

مولانا کا دھرنے میں کارٹون سے زیادہ کردارنظر نہیں آیا، اعتزازاحسن
لاہور(اردوپوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ یکم دسمبر 2019ء) پاکستان پیپلزپارٹی کے سینئر مرکزی رہنماء اعتزازاحسن نے کہا ہے کہ مولاناکا دھرنے میں کارٹون سے زیادہ کچھ کردارنظر نہیں آیا، دھرنے میں ان کے ساتھ تین اضلاع کے پٹھان تھے، مولانا نے 14ہزار بندے لاکرکہا کہ میں حکومت تبدیل کروں گا، ہم مذہب کارڈ استعمال کرنے کے خلاف تھے،ہم دھرنے میں شامل نہیں ہوئے۔

انہوں نے نجی ٹی وی کے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ مولانا فضل الرحمان کے دھرنے میں ان کو کوئی رکاوٹ نہیں ملے، ان کے دھرنے میں ان کے ساتھ تین اضلاع کے پٹھان تھے۔وہ بھی سارے پٹھان نہیں تھے، بلکہ پٹھان من حیث القوم ان کے ساتھ نہیں تھے۔لیکن لورالائی کے پٹھان ، ڈیرہ اسماعیل خان کے پٹھان،اور بنوں کے پٹھان شامل تھے، اب مولانا فضل الرحمان یہ 14ہزار بندے لاکرکہے کہ میں حکومت تبدیل کروں گا۔

(جاری ہے)

یہی بات میں نے عمران خان اور طاہرالقادری کے خلاف بڑی سخت تقریر کرکے کہی تھی۔انہوں نے کہا کہ میں اس معاملے میں بالکل ساتھ نہیں تھا اگر وہ عمران خان اور طاہر القادری والا غلط تھا تو یہ بھی غلط ہے۔ اعتزاز احسن نے کہا کہ بلاول بھٹو نے دوتین چیزیں بڑی واضح کہہ دی تھیں، ہم مذہب کے زور پرسیاست نہیں کریں گے، ہماری پارٹی صرف واحد ہے جو مذہبی کارڈ کے خلاف ہے۔

دوسرا بلاول نے کہا تھا کہ ہم دھرنے میں شریک نہیں ہوں گے، ہمارا مقصد بھی یہی تھا کہ حکومت گرجائے اور مولانا فضل الرحمان کا بھی یہی مقصد تھا، لیکن حکمت عملی میں کچھ فرق آیا۔ ہم دھرنے میں بالکل شامل نہیں ہوئے۔ دوسری جانب جمیعت علماء اسلام(ف) نے 8 دسمبر کو پلان سی شروع کرنے کا فیصلہ کرلیا ہے، پشاور میں آزادی مارچ کے تحت بڑا احتجاجی مظاہرہ کیا جائے گا، اپوزیشن جماعتوں کے قائدین احتجاجی مظاہرے سے خطاب کریں گے۔