نوشہرہ میڈیکل کالج ، احتجاجی طلباء پرگاڑی چڑھانے کی فوٹیج سامنے آگئی

پروفیسرڈاکٹرشاہ نواز نے احتجاجی طلباء پر گاڑی چڑھائی، جس کی زد میں آکر ایک طالبعلم بھی زخمی ہوگیا، کالج انتظامیہ نے اس واقعے کو محض الزام قراردے دیا

sanaullah nagra ثنااللہ ناگرہ اتوار دسمبر 22:56

نوشہرہ میڈیکل کالج ، احتجاجی طلباء پرگاڑی چڑھانے کی فوٹیج سامنے آگئی
لاہور(اردوپوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ یکم دسمبر 2019ء) نوشہرہ میڈیکل کالج میں احتجاجی طلباء پر گاڑی چڑھانے کی فوٹیج سامنے آگئی، پروفیسرڈاکٹرشاہ نواز نے احتجاجی طلباء پر گاڑی چڑھائی، جس کی زد میں ایک طالبعلم بھی زخمی ہوگیا، کالج انتظامیہ نے اس واقعے کو الزام قراردیا۔ تفصیلات کے مطابق نوشہرہ میڈیکل کالج میں پروفیسر کے احتجاجی مظاہرے کے دوران طلباء وطالبات پر گاڑی چڑھانے کی سی سی ٹی وی فوٹیج سامنے آگئی۔

فوٹیج میں دیکھا جاسکتا ہے کہ طلباء طالبات اپنے مطالبات کے حق میں احتجاج مظاہرے کررہے ہیں اور دھرنا دیے بیٹھے ہیں، جبکہ ایک پروفیسر جو گاڑی پر سوار تھے۔ انہوں نے طلباء پر گاڑی چڑھا دی۔ بتایا گیا ہے کہ اس پروفیسر کا نام ڈاکٹرشاہ نواز ہے۔ گاڑی کی زد میں  آکر ایک طالبعلم بھی شدید زخمی ہوگیا۔

(جاری ہے)

دوسری جانب میڈیکل کالج کے ڈین ڈاکٹر جہانگیر نے کہا طالبات کے ساتھ کسی قسم کی کوئی ہراسمنٹ نہیں کی گئی۔

چند طلباء کالج کے نظم وضبط کو خراب کرنے کی سازش میں ملوث ہیں۔ طلباء کے احتجاج کی وجہ سے تدریسی عمل کو نقصان پہنچ رہا ہے۔ واضح رہے نوشہرہ میڈیکل کالج کے طلباء و طالبات نے ہراسگی کے خلاف کلاسز کا بائیکاٹ کر کے احتجاج کیا۔ طلباء کا احتجاج تاحال جاری ہے۔ طلباء وطالبات کا کہنا ہے کہ یونیورسٹی کے ایک کلاس فور ملزم نے طلباء و طالبات کی ویڈیوز بنائیں اور پھر سوشل میڈیا پر اپ لوڈ کر دیں، جس کے بعد ان کو بلیک میل کرنا بھی شروع کر دیا گیا۔

طلباء اور طالبات کا مطالبہ ہے کہ اس واقعے میں ملوث افراد کے خلاف کارروائی کی جائے۔ اسی طلباء نے میڈیا کو بتایا تھا کہ ایک پروفیسر نے ان پر گاڑی چڑھا دی جس میں ایک طالبعلم بھی زخمی ہوگیا لیکن انتظامیہ نے طلباء کے بیان کو الزام قرار دیا تاہم اب پروفیسر کے طلباء پر گاڑی چڑھنے کے واقعے کی فوٹیج بھی سامنے آگئی ہے۔