12 سالہ بچی کو 30 افراد نے اجتماعی جنسی زیادتی کا نشانہ بنا ڈالا

بدبخت باپ نے خود تمام جنسی درندوں کو 2 سال تک معصوم بچی کی عزت تار تار کرتے رہنے کی اجازت دی

muhammad ali محمد علی منگل دسمبر 23:33

12 سالہ بچی کو 30 افراد نے اجتماعی جنسی زیادتی کا نشانہ بنا ڈالا
کیرالہ (اردوپوائنٹ اخبارتازہ ترین۔03 دسمبر 2019ء) 12 سالہ بچی کو 30 افراد نے اجتماعی جنسی زیادتی کا نشانہ بنا ڈالا، بدبخت باپ نے خود تمام جنسی درندوں کو 2 سال تک معصوم بچی کی عزت تار تار کرتے رہنے کی اجازت دی۔ تفصیلات کے مطابق بھارت کے شہر کیرالہ میں سامنے آنے والے ایک خوفناک کیس نے ہر شخص کو جھنجھوڑ کر رکھا دیا ہے۔ بتایا گیا ہے کہ ایک 12 سالہ معصوم بچی کے اپنے بدبخت والد نے بچی کو 30 جنسی درندوں کے ہاتھوں اجتماعی زیادتی کا نشانہ بنوا ڈالا۔

پولیس کے مطابق ساتویں جماعت کی طالبہ نے اپنے بیان میں بتایا ہے کہ اس کے اپنے والد نے جنسی درندوں کو اجازت دی کہ وہ جو چاہیں کر سکتے ہیں۔ پولیس نے بتایا ہے کہ بچی کے والد اور مزید 2 افراد کو گرفتار کر لیا گیا ہے، جبکہ باقی تمام ملزمان کی گرفتاری عمل میں لانے کی کوشش کی جا رہی ہے۔

(جاری ہے)

بتایا گیا ہے کہ اس تمام افسوسناک واقعے کا بھانڈا اس وقت پھوٹا جب بچی کے اسکول میں اساتذہ نے مشاہدہ کیا کہ بچی اکثر اسکول سے غائب رہتی تھی۔

جبکہ بچی کے محلے داروں نے بھی اسکول میں اطلاع دی کہ بچی کے ساتھ کچھ غلط ہو رہا ہے۔ بعد ازاں اس حوالے سے چائلد پروٹیکیشن کے ادارے نے بچی کو اپنی تحویل میں لے کر اس سے پوچھ گچھ کی تو اس نے اپنے ساتھ پیش آئے خوفناک واقعات کی تفصیلات بیان کر دیں جس کے بعد پولیس کے اس حوالے سے اطلاع دی گئی۔ بچی نے مزید بتایا کہ وہ اپنے گھر میں اکلوتی بچی ہے اور کرایہ کے گھر میں رہائش پذیر ہے۔
                                                                                   

متعلقہ عنوان :