دفتر خارجہ نے پاکستان میں اقلیتی آبادی میں تیزی سے کمی سے متعلق بھارتی دعوے کو مسترد

پاکستانی جھنڈے میں سفید رنگ اتنا ہی مقدم ہے جتنا سبز، تاریخی حقائق اور مردم شماری کے نتائج بھارتی سیاست دانوں کے دعووں کو جھٹلاتے ہیں، ڈاکٹر محمد فیصل

ہفتہ دسمبر 22:19

دفتر خارجہ نے پاکستان میں اقلیتی آبادی میں تیزی سے کمی سے متعلق بھارتی ..
اسلام آباد ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - اے پی پی۔ 14 دسمبر2019ء) ترجمان دفتر خارجہ ڈاکٹر محمد فیصل نے پاکستان میں اقلیتی آبادی میں تیزی سے کمی سے متعلق بھارتی دعوے کو مسترد کرتے ہوئے کہا ہے کہ پاکستانی جھنڈے میں سفید رنگ اتنا ہی مقدم ہے جتنا سبز۔ہفتہ کو ترجمان نے اپنے ایک ٹویٹ میں بھارتی سیاست دانوں کے اس دعوے کو مسترد کیا ہے جس میں دعوی کیا گیا تھا کہ پاکستان میں اقلیتی آبادی 23فیصد سے کم ہو کر 3.72فیصد رہ گئی ہے۔

ترجمان کا کہنا ہے کہ تاریخی حقائق اور مردم شماری کے نتائج بھارتی سیاست دانوں کے دعووں کو جھٹلاتے ہیں۔ترجمان نے تاریخی حقائق پیش کرتے ہوئے کہا ہے کہ 1951کی مردم شماری کے نتائج کے مطابق مغربی پاکستان میں اقلیتی آبادی 3.44فیصد تھی جبکہ اس وقت مشرقی پاکستان میں اقلیتی آبادی کا تناسب 23.2فیصد تھا۔

(جاری ہے)

مردم شماری نتائج کے مطابق پورے پاکستان میں اقلیتی آبادی کا تناسب 14.2فیصد تھا۔

1971میں مشرقی پاکستان کے بنگلہ دیش بننے سے اقلیتی آبادی کا تناسب تبدیل ہوا۔1971کے سانحہ کے 23.2فیصد اقلیتی آبادی مشرقی پاکستان سے بنگلہ دیش کی شہری بنی۔ترجمان نے کہا ہے کہ بنگلہ دیش سے کم ہونے والی آبادی کا الزام پاکستان پر لگانا بے بنیاد جھوٹ پر مبنی ہے۔ترجمان نے کہا کہ پاکستانی جھنڈے میں سفید رنگ اتنا ہی مقدم ہے جتنا سبز۔