Live Updates

امریکی صدر نے قاسم سلیمانی پر حملے کہ وجہ بتا دی

ایران ہمارے چار سفارتخانوں کو نشانہ بنانا چاہتا تھا۔ ڈونلڈ ٹرمپ کا انٹرویو کے دوران دعویٰ

Muqadas Farooq مقدس فاروق اعوان ہفتہ جنوری 13:18

امریکی صدر نے  قاسم سلیمانی پر حملے کہ وجہ بتا دی
واشنگٹن(اردوپوائنٹ تازہ ترین اخبار-11جنوری2020ء) امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے ایرانی جنرل قاسم سلیمانی پر حملے کہ وجہ بتا دی۔امریکی نشریاتی ادارے کو انٹریو دیتے ہوئے امریکی صدر نے کہا کہ جب امریکا نے جنرل قاسم سلیمانی کو قتل کیا تو ایران ہمارے چار سفارتخانوں کو نشانہ بنانا چاہتا تھا اور اس نے بغداد میں امریکی سفارتخانے کو نشانہ بنایا۔ڈونلڈ ٹرمپ نے مزید کہا کہ میں یہ انکشاف کر سکتا ہوں اور مجھے یقین ہے کہ یہ ہمارے چار سفارتخانے ہی ہوتے، ہم بتائیں گے کہ یہ بغداد میں ہمارے سفارتخانے کو نشانہ بنانے جا رہے تھے۔

علاوہ ازیں امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے کہاہے کہ ایران کی جانب سے عراق میں فوجی اڈوں پر میزائل کے داغے جانے پر ان کا ملک ایران کیساتھ جنگ کرنے کے لیے تیار تھا تاہم کوئی ہلاکت نہ ہونے کے سبب ہم جنگ کی طرف نہیں گئے۔

(جاری ہے)

خبر رساں ادارے کے مطابق جمعے کے روز ایک انتخابی جلسے سے خطاب کرتے ہوئے صدر ٹرمپ نے ایک بار پھر باور کرایا کہ 3 جنوری کو بغداد کے ہوائی اڈے پر امریکی حملے میں مارا جانے والا ایرانی سینئر کمانڈر قاسم سلیمانی امریکی مفادات کیخلاف نئے حملوں کی منصوبہ بندی میں مصروف تھا ‘وہ نہ صرف عراق بلکہ دیگر ممالک میں بھی امریکی سفارتخانوں کو نشانہ بنانے کی تیاری کر رہا تھا۔

امریکی صدر نے مزید کہا کہ اگر ایوان نمائندگان میں انٹیلی جنس کمیٹی کے سربراہ ایڈم شیف کو قاسم سلیمانی کیخلاف حملے کا علم ہو جاتا تو وہ اس پر عمل درآمد سے قبل ہی میڈیا میں اِفشا کر دیتے۔ ٹرمپ کا اشارہ ایوان نمائندگان بالخصوص ڈیموکریٹک ارکان کی طرف سے کی گئی اس تنقید اور نکتہ چینی کی جانب تھا جس میں کہا گیا کہ بیرون ملک کسی بھی عسکری حملے پر عمل درامد سے قبل ایوان کو مطلع کرنا ضروری ہے۔
ایران اور امریکہ کے درمیان کشیدگی سے متعلق تازہ ترین معلومات