افغان دارالخلافہ کابل کے گرین زون میں واقع مسجد میں دھماکہ، امام مسجد اور نمازی جاں بحق

کابل کے گرین زون میں واقع مشہور ’وزیر اکبر خان مسجد‘ میں زوردار دھماکہ ہوا، دھماکے کے وقت مسجد میں معروف عالم دین ایاز نیازی اور نمازی موجود تھے، مسجد کا ایک حصہ منہدم ہو گیا۔ افغان میڈیا

Kamran Haider Ashar کامران حیدر اشعر جمعرات جون 04:07

افغان دارالخلافہ کابل کے گرین زون میں واقع مسجد میں دھماکہ، امام مسجد ..
کابل (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 04 جون 2020ء) افغان دارالخلافہ کابل کے گرین زون میں واقع مسجد میں دھماکہ، امام مسجد اور نمازی جاں بحق۔ کابل کے گرین زون میں واقع مشہور ’وزیر اکبر خان مسجد‘ میں زوردار دھماکہ ہوا، دھماکے کے وقت مسجد میں معروف عالم دین ایاز نیازی اور نمازی موجود تھے، مسجد کا ایک حصہ منہدم ہو گیا۔ تفصیلات کے مطابق افغانستان کے دارالحکومت کابل کے گرین زون کی مشہور مسجد میں دھماکے کے نتیجے میں امام مسجد اور نمازی جاں بحق ہو گئے۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق شہر کے محفوظ ترین علاقے میں ہونے والے اس دھماکے کی آواز دور دور تک سنی گئی اور قریب ہی واقع سفارت خانوں اور بین الاقوامی دفاتر میں دھماکے کے بعد سائرن بجنے لگے اور عملہ محفوظ کمروں کی جانب روانہ ہو گیا۔

(جاری ہے)

ملک کی وزارت داخلہ کے ترجمان طارق آریان نے کہا کہ بدقسمتی سے اس شام دہشت گردوں نے وزیر اکبر خان مسجد میں دھماکہ خیز مواد کے ذریعے حملہ کیا۔

یہ مسجد گرین زون کے داخلی دروازے پر واقع ہے اور اس انتہائی سکیورٹی کے حامل علاقے میں واقع مسجد میں لوگ دونوں اطراف سے داخل ہو سکتے ہیں اور اہم رہنما اکثر عید کی نماز یہاں ادا کرتے ہیں۔ طارق آریاں نے بتایا کہ دھماکے میں مسجد کے امام ایاز نیازی جاں بحق ہو گئے، وہ کابل میں مشہور تھے اور ان کے خطبات میں لوگ دور دراز کے علاقوں سے شرکت کے لیے آتے تھے۔

آریان نے ابتدائی بیان میں کہا تھا کہ یہ خودکش حملہ تھا لیکن تحقیقات کے بعد انہوں نے کہا کہ ابھی دھماکے کی نوعیت کے بارے میں کچھ واضح نہیں ہے۔ افغانستان کے صدر اشرف غنی کے ترجمان نے اسے ایک گھناؤنا حملہ قرار دیا۔ 
وائس آف امریکہ کے ساتھ افغان امور کے حوالے سے منسلک خاتون صحافی شائستہ سادات نے اپنے ایک ٹوئیٹ میں بتایا کہ ابھی تک مسجد میں ہونے والے دھماکے کی ذمے داری کسی گروپ نے قبول نہیں کی۔