سینیٹ الیکشن سے قبل خواتین ارکان کو فنڈز جاری کرنے پر الیکشن کمیشن نے نوٹس لے لیا

الیکشن کمیشن آف پاکستان نے پاکستان پیپلز پارٹی کی درخواست سماعت کے لیے مقرر کردی

Sumaira Faqir Hussain سمیرا فقیرحسین ہفتہ مارچ 11:02

سینیٹ الیکشن سے قبل خواتین ارکان کو فنڈز جاری کرنے پر الیکشن کمیشن ..
اسلام آباد (اُردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار۔ 06 مارچ 2021ء) : الیکشن کمیشن آف پاکستان نے سینیٹ انتخابات سے قبل خواتین ارکان کو فنڈز جاری کرنے پر نوٹس لے لیا۔ تفصیلات کے مطابق الیکشن کمیشن نے وزیراعظم عمران خان کی جانب سے سینیٹ انتخابات سے قبل خواتین اراکین اسمبلی کو فنڈز دینے کا نوٹس لیتے ہوئے ان کے خلاف پیپلز پارٹی کی درخواست سماعت کے لیے مقرر کردی۔

میڈیا رپورٹ کے مطابق وزیراعظم عمران خان کی جانب سے خواتین ارکان اسمبلی کو عین سینیٹ انتخابات سے قبل فنڈ جاری کرنے کے خلاف پیپلز پارٹی کے جنرل سیکریٹری نیر بخاری نے درخواست دی تھی۔ درخوست کو الیکشن کمیشن نے منظور کرتے ہوئے اسے سماعت کے لیے مقرر کردیا ہے یہ سماعت 11 مارچ کو ہوگی۔ الیکشن کمیشن سینیٹ الیکشن میں کرپٹ پریکٹسز اور علی رضا گیلانی سے متعلق مبینہ وڈیو پر بھی سماعت 11 مارچ کو کرے گا جس کے لیے پی ٹی آئی کے ارکان کنول شوزب اور فرخ حبیب نے درخواست دے رکھی ہے۔

(جاری ہے)

دریں اثنا خیبرپختونخوا کے گزشتہ سینیٹ انتخابات کے ویڈیو اسکینڈل پرمسلم لیگ ن کی درخواست پر سماعت 9 مارچ کو ہوگی۔ یاد رہے کہ حکومت نے سینیٹ الیکشن سے قبل اراکان اسمبلی کو ترقیاتی فنڈز جاری کیے تھے جس پر کئی سیاسی جماعتوں نے اعتراضات اُٹھائے اور کہا کہ یہ ترقیاتی فنڈز دراصل ووٹ حاصل کرنے کے لیے رشوت کے عرض دئے گئے ہیں جس پر نوٹس لیا جانا چاہئیے۔

خیال رہے کہ اس سے قبل سپریم کورٹ نے وزیراعظم کی جانب سے ارکان اسمبلی کو ترقیاتی فنڈز جاری کرنے کے معاملے پر بھی نوٹس لیا تھا جس پر جسٹس قاضی فائز عیسیٰ کے نوٹس پر 5 رکنی لارجر بینچ تشکیل دیا گیا تھا۔ جسٹس قاضی فائز عیسیٰ نے وزیراعظم کی جانب سے ارکان اسمبلی کو ترقیاتی فنڈز دینے کے معاملے پر اخباری خبر پر نوٹس لیا تھا۔