سخت رویوں سے ہمیشہ مسائل پیدا ہوتے ہیں اور فیصلے لینے میں تاخیر سے نقصانات ہوتے ہیں،وزیراعلی میر عبدالقدوس بزنجو

پیر 6 دسمبر 2021 23:34

سخت رویوں سے ہمیشہ مسائل پیدا ہوتے ہیں اور فیصلے لینے میں تاخیر سے نقصانات ..
کوئٹہ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - آن لائن۔ 06 دسمبر2021ء) وزیراعلیٰ بلوچستان میر عبدالقدوس بزنجو نے کہا ہے کہ سخت رویوں سے ہمیشہ مسائل پیدا ہوتے ہیں اور فیصلے لینے میں تاخیر سے نقصانات ہوتے ہیں گوادر دھرنا جولائی سے جاری ہے ہم نے گودار دھرنے سے متعلق لچک کا مظاہرہ کرتے ہوئے مزاکرات کیئے اور انکے مطالبات کو نہ صرف تسلیم کیا بلکہ انکے مطالبات پر عملدرآمد بھی کیا جا رہا ہے غیر قانونی ٹرالنگ کا سختی سے سدباب کیا جارہا ہے سرحدی علاقوں کے لوگوں کو انکے روزگار کے لیئے بہت زیادہ ریلیف دیا جارہا ہے مزید کراسنگ پوائینٹس بنائے جارہے ہیں بجلی پانی کے مسائل کو ترجیحی بنیادوں پر حل کیا جارہاہے اور 70فیصد چیک پوسٹوں کو ختم کر دیا گیا ہے ان خیالات کا اظہار انہوں نے جماعت اسلامی کے مرکزی رہنما لیاقت بلوچ سے بات چیت کرتے ہوئے کیا جنہوں نے یہاں ان سے ملاقات کی جماعت اسلامی کی صوباء قیادت چیف سیکرٹری بلوچستان مطہر نیاز رانا آء جی پولیس اور ایڈیشنل چیف سیکرٹری داخلہ بھی اس موقع پر موجود تھے ملاقات میں جماعت اسلامی کے ضلعی رہنما مولانا ہدایت الرحمان کی قیادت میں گوادر میں جاری دھرنے سے متعلق امور پر بات چیت کی گئی وزیراعلیٰ نے جماعت اسلامی کے رہنما کو دھرنے کے مطالبات کے حوالے سے صوباء حکومت کے اقدامات سے آگاہ کرتے ہوئے بتایا کہ حکومت خود بھی ان مطالبات کو صیح تسلیم کرتی ہے اور ان مسائل کا حل ہماری حکومت کی ترجیحات میں پہلے ہی سے شامل ہے ہم اپنے لوگوں کی بھلاء اور انکے روزگار کے دستیاب وسائل کے تحفظ کے لیئے کسی حد تک بھی جانے کے لیئے تیار ہیں وزیراعلیٰ نے وسائل کے حوالے سے صوبے کو درپیش مسائل کا زکر کرتے ہوئے کہا کہ ہمیں این ایف سی کے تحت ملنے فنڈز میں سے ترقیاتی مد میں صرف 50ارب روپے بچتے ہیں بلوچستان آدھا پاکستان ہے جسکی ترقی اتنے محدود وسائل میں ممکن نہیں وزیراعلیٰ نے ملک کی سیاسی جماعتوں سے درخواست کرتے ہوئے کہا کہ سیاسی جماعتیں بلوچستان کو رقبے کی بنیاد پر فنڈز کی فراہمی اور قومی اسمبلی میں بلوچستان کی نشستوں میں اضافے کے لیئے ہماری حمایت کریں لیاقت بلوچ نے اپنی جماعت کی جانب سے بلوچستان کے موقف کی بھرپور حمایت کا اعلان کیا انہوں نے گودر دھرنے کے حوالے سے حکومت بلوچستان کے سنجیدہ اقدامات کو سراہا اس موقع پر طے پایا کہ کمشنر مکران اور ڈپٹی کمشنر گوادر دھرنے کے منتظمین کے ساتھ ملکر کر انکا چارٹر آف ڈیمانڈ اور اب تک ہونے والے اقدامات کا تقابلی جائیزہ تیار کرکے حکومت کو پیش کرینگے جبکہ جماعت اسلامی کے رہنما لیاقت بلوچ گوادر جاکر دھرنے کے منتظمین کو حکومت کے موقف سے آگاہ کرینگی
>