کنٹرول لائن کے پار جنگجوؤں کا نیٹ ورک بدستور قائم ہے ، جنرل بکرم سنگھ ، جموں وکشمیر میں اب بھی چار سو جنگجو سرگرم ہیں ، انٹرویو

جمعرات جنوری 04:43

سرینگر(اُردو پوائنٹ اخبار آن لائن۔2جنوری۔2014ء) بھارتی فوج کے سربراہ جنرل بکرم سنگھ نے الزام عائد کیا ہے کہ کنٹرول لائن کے بار جنگجوؤں کا نیٹ ورک بدستور قائم ہے اور جنگجوؤں کو کشمیر بھیجنے کی کوششیں بھی جاری ہیں ۔ اپنے ایک انٹرویو میں بھارتی فوج کے سربراہ نے کہا کہ لائن آف کنٹرول کے آر پار جاری جنگجوہانہ ڈھانچہ کشمیر کے امن کے لئے ایک بڑا خطرہ ہے ۔

انہوں نے کہا کہ جموں وکشمیر میں تعینات فوج کو حاصل خصوصی اختیارات افسپا کو جاری رکھا جانا چاہیے ۔ جنرل بکرم سنگھ کے مطابق افسپا کو ہٹانے یا اس ایکٹ میں کسی بھی قسم کی نرمی کرنے سے کشمیر میں سرگرم جنگجوؤں کو ہی فائدہ ہوگا جبکہ کنٹرول لائن کے پار سے بھی زیادہ تعداد میں جنگجو کشمیر میں داخل ہونگے ۔

(جاری ہے)

انہوں نے کہا کہ اگر جموں کشمیر سے افسپا ایکٹ کو ہٹانے کا کوئی فیصلہ کیا گیا یا اس ایکٹ میں کسی بھی قسم کی نرمی کی گئی تو اس سے سرگرم جنگجوؤں کے حوصلے ہی بڑھیں گے جبکہ جنگجو مخالف آرمی آپریشنوں پراس کا منفی اثر پڑے گا انہوں نے کہا کہ سرحد پار جنگجوہانہ ڈھانچے کو کمزور کرنے کیلئے افسپا ہی سب سے کارآمد ہتھیار ہے کیونکہ کشمیر میں تعینات فوج کو حاصل افسپا سے ہی پاکستانی جنگجوؤں پر بڑا دباؤ ہے جبکہ کشمیر میں سرگرم جنگجوؤں پر بھی اس ایکٹ سے کافی دباؤ ہے ۔

متعلقہ عنوان :

Your Thoughts and Comments