لاہور ہائی کورٹ نے آرمی کے لاپتہ ہونے والے ریٹائر میجر اور ان کے بیٹے کی بازیابی کے لیے دائر درخواست پر وزارت دفاع سے 14جنوری کو رپورٹ طلب کر لی

جمعرات جنوری 04:04

لاہور(اُردو پوائنٹ اخبار آن لائن۔2جنوری۔2014ء)لاہور ہائی کورٹ نے آرمی کے لاپتہ ہونے والے ریٹائر میجر اور ان کے بیٹے کی بازیابی کے لیے دائر درخواست پر وزارت دفاع سے 14جنوری کو رپورٹ طلب کر لی ۔چیف جسٹس لاہور ہائی کورٹ عمر عطا بندیا ل نے کیس کی سماعت کی۔

پولیس کی جانب سے عدالت کو بتایا گیا کہ میجر طارق اور ان کے بیٹے علی طارق کا تعلق کالعدم تنظیموں سے ہے اور امکان ہے انہی کے پاس ہیں۔

عدالت نے پولیس رپورٹ کے بعد وزارت دفاع سے جواب طلب کر لیا کہ حساس اداروں سے دونوں لاپتہ افراد کے حوالے سے تفصیلات لے کر عدالت کے روبرو پیش کی جائیں۔ درخواست گزار نعیمہ طارق کی جانب سے عدالت کو بتایا گیا کہ ان کا شوہر میجر ریٹائر طارق اور بیٹا علی دو ماہ قبل نماز جمعہ کے لیے گئے جس کے بعد لاپتہ ہو گئے خدشہ ہے کہ حساس اداروں نے انھیں اغوا کر لیا ہے ۔

متعلقہ عنوان :

Your Thoughts and Comments