آئین توڑنے والے کو ہزاروں اہلکاروں کی سکیورٹی دی جارہی ہے‘ حفاظت کرنے والے کو نہیں‘ جسٹس شوکت عزیز صدیقی،سابق چیف جسٹس افتخار محمد چوہدری کو سکیورٹی دینے سے متعلق کیس کی سماعت میں ریمارکس‘ سیکرٹری کابینہ‘ آئی جی اسلام آباد آج طلب

جمعہ جنوری 07:41

اسلام آباد(اُردو پوائنٹ اخبار آن لائن۔3جنوری۔2014ء) اسلام آباد ہائیکورٹ کے جسٹس شوکت عزیز صدیقی نے سابق صدر پرویز مشرف کو دی جانے والی بھاری سکیورٹی پر تحفظات کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ آئین توڑنے والے کو ہزاروں اہلکاروں کی سکیورٹی دی جارہی ہے اور آئین کی حفاظت کرنے والے کو نہیں۔

(جاری ہے)

جمعرات کو سابق چیف جسٹس افتخار محمد چوہدری کو سکیورٹی دینے سے متعلق دائر درخواست کی سماعت کے دورا ن جسٹس شوکت عزیز صدیقی نے ریمارکس دئیے کہ یہ حیران کن بات ہے کہ ایک آئین توڑنے والے کو تو ہزاروں اہلکاروں کی سکیورٹی دی جارہی ہے لیکن جس نے آئین کی حفاظت کی اسے کوئی سکیورٹی نہیں دی جارہی۔

۔ دورا ن سما عت وزارت داخلہ کی جانب سے ایڈیشنل سیکرٹری اطہر عباس نے عدالت میں جواب داخل کیا جس میں موقف اختیار کیا گیا کہ وزارت داخلہ کی جانب سے سابق چیف جسٹس افتخار محمد چوہدری کو بلٹ پروف گاڑی مرسڈیز بینز اور 16 اہلکار دئیے گئے ہیں۔ بعدا ازا ں شوکت عزیز صدیقی نے سابق چیف جسٹس کو سکیورٹی دینے سے متعلق (آج) جمعہ کو سیکرٹری کابینہ اور آئی جی اسلام آباد کو طلب کرلیا ہے۔

Your Thoughts and Comments