ایران سے باہمی تجارت 5ارب ڈالر تک بڑھانے پر اتفاق ہوا،خرم دستگیر، عالمی پابندیاں ختم ہونے کے بعد ایران کے ساتھ گیس فراہمی کا بڑا منصوبہ شروع کیا جا رہا ہے، گیس کے علاوہ ایران سے بجلی اور تیل بھی درآمد کر رہے ہیں، 64 امریکہ سے قیدیوں کو واپس بھجوایا گیاعافیہ صدیقی شامل نہیں، وزیر تجارت،جعلی اور مہنگی ادویات فروخت کرنیوالے عدالتوں سے حکم امتناعیلے لیتے ہیں،سارہ افضل، پاکستان میں شرح خواندگی60فیصد ہے، حکومت صوبوں کے ساتھ مل کر تعلیم کے شعبے کو خصوصی توجہ دے رہی ہے، بلیغ الرحمن،سینٹ وقفہ سوالات میں جواب

ہفتہ جنوری 09:50

اسلام آباد(اُردو پوائنٹ اخبارآن لائن۔2جنوری۔2016ء) سینٹ کو بتایا گیا کہ ایران پر سے عالمی پابندیاں اٹھنے کے بعد دونوں ممالک کے مابین سالانہ 5ارب ڈالر کی تجارت پر اتفاق کیا گیا ہے جس میں گیس کی فراہمی ،بجلی تیل اور دیگر شعبوں میں تجارت کے معاہدے شامل ہیں ،پاکستان میں ڈرگ کورٹس کی حالت زار بہت خراب ہے جعلی اور مہنگی ادویات فروخت کرنے والوں کے خلاف کاروائی میں کئی سال لگ جاتے ہیں ،گذشتہ 7سال کے دوران امریکہ سے 64پاکستانیوں کو مختلف سزاؤں میں سزا کے بعد ڈی پورٹ کیا گیا ہے ،ملک میں شرح خواندگی پڑوسی ممالک کے مقابلے میں شرمناک حد تک کم ہے جس میں اضافے کیلئے وفاق اور صوبے بھرپور کوششیں کر رہے ہیں ایوان بالا میں وفقہ سوالات کے دوران سینیٹر چوہدری تنویر خان کے سوال کا جواب دیتے ہوئے وفاقی وزیر تجارت انجینئر خرم دستگیر نے کہا ہے کہ ایران پر عالمی پابندیوں کی وجہ سے دوطرفہ تعلقات کی راہ میں مشکلات کا سامنا ہے پاکستان اور ایران کے مابین دوطرفہ تجارت کے کئی معاہدے موجود ہیں اور موجود ہ حکومت نے ایران کے ساتھ دوطرفہ تجارت کو مذید بڑھایا ہے انہوں نے بتایا کہ ایران کے ساتھ گیس فراہمی کا بڑا منصوبہ ایرن پر سے عالمی پابندیاں ختم ہونے کے بعد شروع کیا جا رہا ہے اور دونوں اطراف سے یہ خواہش ظاہر کی گئی ہے کہ دوطرفہ تجارت کا حجم 5ارب ڈالر تک بڑھایا جائے گا انہوں نے بتایا کہ گیس کے علاوہ پاکستان ایران سے بجلی اور تیل بھی درآمد کر رہا ہے اس وقت مکران ڈویژن کو 74میگا واٹ بجلی ایران فراہم کر رہا ہے جسے 100میگا واٹ تک بڑھایا جائے گاجبکہ 1000میگا واٹ بجلی درآمد کرنے کے دو اضافی منصوبوں پر بھی غور کیا جا رہا ہے جسے بعد میں 3ہزار میگا واٹ تک بڑھایا جائے گا ۔

سینیٹر طاہر حسین مشہدی کے سوال کا جواب دیتے ہوئے وفاقی وزیر مملکت نیشنل ہیلتھ سائرہ افضل تارڑ نے بتایا کہ پاکستان کی تاریخ میں پہلی بار ڈرگ پالیسی کے تحت ادویات کی قیمتوں کو کنٹرول کیا جا رہا ہے موجودہ حکومت ادویات کی قیمتوں پر کسی قسم کا سمجھوتہ نہیں کرے گی انہوں نے کہاکہ اس شعبے میں بہت سی خرابیوں کا سامنا ہے ہیپاٹائٹس کی ادویات کی فراہمی کیلئے جن کمپنیوں نے ٹینڈر جمع کرائے تھے ان میں تحقیقات کے بعد معلوم ہوا ہے کہ کئی کمپنیوں کی ادویات سے متعلق فراہم کردہ معلومات درست نہیں ہیں انہوں نے بتایا کہ پاکستان میں ادویات کیلئے قائم ڈرگ کورٹس کی حالت زار بہت خراب ہے جعلی اور مہنگی ادویات فروخت کرنے والوں کے خلاف کاروائی کے بعد مذکورہ افراد فوری طور پر عدالتوں سے حکم امتناعی حاصل کر لیتے ہیں انہوں نے کہاکہ بعض اہم مقدمات میں ہم مجبوراً سپریم کورٹ سے رجوع کر لیتے ہیں سینیٹر طاہر حسین مشہدی کی جانب سے امریکہ سے واپس بجھوائے جانے والے قیدیوں سے متعلق سوال کا جواب دیتے ہوئے انچارج وزیر انجینئر خرم دستگیر نے کہا کہ اب تک 64قیدیوں کو امریکہ سے واپس بھجوایا گیا ہے انہوں نے بتایا کہ اس فہرست میں عافیہ صدیقی کا نام نہیں ہے اس سلسلے میں دوسرا سوال فراہم کیا جائے تو معلومات فراہم کی جا سکتی ہیں سینیٹر محمد اعظم خان سواتی کی جانب سے پوچھے جانے والے سوال کا جواب دیتے ہوئے وفاقی وزیر فیڈرل ایجوکیشن محمد بلیغ الرحمن نے کہاکہ پاکستان کی شرح خواندگی اس وقت60فیصد ہے جو کہ پڑوسی ممالک سے کم ہے انہوں نے بتایا کہ پاکستان اس وقت شرح خواندگی میں صرف افغانستان سے آگے ہے موجودہ حکومت صوبوں کے ساتھ مل کر تعلیم کے شعبے کو خصوصی توجہ دے رہی ہے اور امید ہے کہ حالیہ سال کے دوران شرح خواندگی میں بڑی حد تک اضافہ ہوجائے گا۔

Your Thoughts and Comments