ایمنسٹی سکیم،بااثر سیاسی و کاروباری افراد کو احتساب سے بچانے کا فارمولا،احتساب کے عمل میں تیزی کی وجہ سے بااثر سیاسی و کاروباری افراد پر احتساب کے خوف کے بادل منڈلا رہے تھے،غیر قانونی دولت کو قانونی حیثیت دینے کیلئے تاجر برادری کی آڑ میں ایمنسٹی سکیم متعارف کروا جا رہی ہے،نیب ذرائع

پیر جنوری 09:23

اسلام آباد (اُردو پوائنٹ اخبارآن لائن۔4جنوری۔2016ء)حکومت نے احتساب کے عمل سبوتاژ کرنے اور کرپشن و غیر قانونی طریقے سے کمائی گئی دولت کو قانونی حیثیت دینے کیلئے تاجر برادری کی آڑ میں ایمنسٹی سکیم متعارف کروا رہی ہے۔ نیب ذرائع کے مطابق گزشتہ چند ماہ میں احتساب عمل میں تیزی کی وجہ سے بااثر سیاسی و کاروباری افراد پر احتساب کے خوف کے بادل منڈلا رہے تھے۔

جس پر حکومت نے من پسند افراد کو احتساب سے بچانے کیلئے ایمنسٹی سکیم کا اعلان کیا ہے۔ ان کے مطابق ایمنسٹی سکیم دراصل کالا دھن رکھنے والوں کیلئے ایک محفوظ راستہ مہیا کیا گیا ہے اور بلیک منی کو وائٹ منی بنانے کا سرٹیفکیٹ دیا جارہا ہے ۔ ایمنسٹی سکیم کے ذریعے دولت ظاہر کرنے کے بعد قانون نافذ کرنے والے ادارے انکوائری و کارروائی کے مجاز نہیں رہیں گے۔

(جاری ہے)

ذرائع کا مزید کہنا تھا کہ احتساب کا عمل صوبہ سندھ کے بعد صوبہ پنجاب میں بھی شروع ہوچکا ہے جس کے ردعمل میں حکومت نے احتساب کے عمل کو ثبوتاژ کرنے کیلئے ایک قانون و آئینی راستے کے ذریعے کالا دھن رکھنے والوں کو سہارا دینے کا فیصلہ کیا ہے ان کے مطابق ایمنسٹی سکیم سے صرف ایک فیصد ٹیکس ادائیگی کے بعد پانچ کروڑ تک کی دولت کو قانونی قرار دیا جائے گا اور ذرائع آمدن کو تحقیقات سے استثنیٰ مل جائے گا۔

کرپشن و ناجائز طریقے سے حاصل کی جانے والی دولت مختلف رشتہ داروں اور بااعتماد رفقاء کے نام پر ظاہر کرکے سفید دھن کا سرٹیفکیٹ حاصل کرلیں گے۔ اس سلسلے میں کرپشن اور غیر قانونی طریقے سے دولت کمانے والوں کے خلاف کارروائی ناممکن ہوجائے گی ۔ ذرائع کا مزید کہنا تھا کہ سندھ میں احتساب سے بڑے مگر مچھ ہاتھ دالا گیا ہے اور احتساب کا دائرہ کار بڑھا کر پنجاب اور دوسرے صوبوں تک پھیلایا جارہا ہے جس سے مسلم لیگ (ن) کے اہم سیاسی افراد کے خلاف احتساب کیا جانا ہے اور حکومت نے ان کو بچانے کیلئے تاجروں کی آڑ میں ایمنسٹی سکیم کا اعلان کردیا ہے۔

ڈاکٹر عاصم کی گرفتاری کے بعد کرپشن میں ملوث مسلم لیگ (ن) کے اہم رہنماؤں کے خلاف احتساب کا عمل شروع کیا جارہا ہے۔ ایمنسٹی سکیم سے کرپشن و غیر قانونی دولت رکھنے والوں کے خلاف کارروائی کرنے والے اداروں کے ہاتھ باندھ دیئے گئے ہیں۔ کرپشن اور کالا دھن رکھنے والوں کے خلاف کارروائی کرنے والے اداروں پر سیاسی اثر و رسوخ ختم ہونے کی وجہ عسکری مداخلت ہے جس کے مطابق عسکری قیادت احتساب عمل شفاف طریقے سے کروا رہی ہے اور احتساب سے بچنے کیلئے ایمنسٹی سکیم کے ذریعے کالے دھن کو سفید دھن بنانے کا سنہری موقع فراہم کیا گیا ہے۔

متعلقہ عنوان :

Your Thoughts and Comments