ماں نے آٹھ ماہ کے بچے کا سرتن سے جدا کردیا

خاتون نیم بے ہوشی کی حالت میں ہے اور بات نہیں کرسکتی لیکن اب بھی وہ مشتعل ہے،ڈپٹی کمشنر پولیس

ہفتہ اپریل 12:30

نئی دہلی (اُردو پوائنٹ اخبار آن لائن۔ ہفتہ اپریل ء)بھارت میں ایک ذہنی مریضہ ماں نے اپنے 8ماہ کے بچے کا گلاکاٹ کر لاش کے ٹکڑے کردیئیاور خود کو بھی زخمی کرلیا۔بھارتی اخبار کی رپورٹ کے مطابق دلخراش واقعہ دہلی کے علاقے امن وہار میں پیش آیا، 29سالہ ساریکا کو گرفتار کرکے نیم بے ہوشی کی حالت میں اسپتال منتقل کردیا گیا ہے۔

ڈپٹی کمشنر پولیس کا کہنا تھا کہ خاتون نیم بے ہوشی کی حالت میں ہے اور بات نہیں کرسکتی لیکن اب بھی وہ مشتعل ہے۔پولیس کا کہنا تھا کہ خاتون کے ذہنی مرض کا لیڈی ہارڈنگ اسپتال میں علاج جاری تھالیکن اٴْس نے کبھی اپنے دوسرے بچوں کے لئے اس رویہ کا اظہار نہیں کیا ۔ساریکا کے شوہرشنکر کا کہنا تھا کہ گھر کے کام کاج پر زور دینے کی وجہ سے اٴْس کا بیوی سے جھگڑا رہتا تھا لیکن حالیہ چند دنوں میں ایسی کوئی بات نہیں ہوئی جو تشدد کا باعث بنی ہو۔

(جاری ہے)

ماہرنفسیات رجت مشرا کا کہنا تھا کہ خاتون سے بات چیت کئے بغیر اس مخصوص کیس پر رائے دینا مشکل ہے کیونکہ ضروری نہیں ایسے جرم کی وجہ کسی بھی شخص کی ذہنی بیماری ہو۔خاتون کی دو بیٹیاں جن کی عمریں سات اور دوسال ہیں، بیشتر وقت پڑوس میں اپنے دادا ، دادی کے پاس رہتیہیں اور وقوعہ کے وقت بھی وہ انہی کے پاس تھے جبکہ شوہر کام پر گیا ہواتھا۔واقعے علم اس وقت ہوا جب رات تقریباً ڈیڑھ بجے شنکر گھر آیا اور بار بار دستک کے باوجود دروازہ نہ کھلا تو اٴْس لاتیں مار کر دروازے کو کھولا۔شنکر نے بتایا کہ جب وہ گھر میں داخل ہوا تو بچے کا سر زمین پر پڑا تھا اور اس کی بیوی بے ہوشی کے عالم میںبچے کے سینے پر سر رکھے ہوئے تھی۔

Your Thoughts and Comments