بھارت، ہندوں کے مذہبی پیشوا اسارام باپو کو لڑکی سیزیادتی کے جرم میں عمر قید کی سزا

جمعرات اپریل 16:26

نئی دہلی (اُردو پوائنٹ اخبار آن لائن۔ جمعرات اپریل ء)بھارتی وزیراعظم نریندو مودی کے اتحادی ہندوں کے مذہبی پیشوا اسارام باپو کو کم عمر لڑکی کے ساتھ زیادتی کا جرم ثابت ہونے پر عمر قید کی سزا سناد دی گئی۔بھارتی میڈیا کے مطابق اسا رام باپو نے 2013 میں جودھ پور کے ایک آشرم میں 16 سالہ لڑکی کو جنسی زیادتی کا نشانہ بنایا تھا۔

ہندوں کے 77 سالہ مذہبی پیشوا اسارام باپو کے خلاف فیصلہ سیکیورٹی وجوہات کی بنا جودھپور کی جیل میں سنایا گیا۔اسا رام باپو کو جودھپور آشرم میں لڑکی کے ساتھ زیادتی کے الزام میں 2013 میں بھارتی ریاست مدھیہ پردیش کے شہر اندور سے گرفتار کیا گیا تھا۔خواتین سے زیادتی کے مجرم گرمیت سنگھ کو 20 سال قیداسا رام باپو کی سزا کے خلاف مظاہروں کے پیش نظر بھارت کی 4 ریاستوں راجستھان، اتر پردیش، ہریانہ اور گجرات میں سیکیورٹی الرٹ کر دی گئی ہے۔

(جاری ہے)

دنیا بھر میں 400 آشرم کی دیکھ بھال کرنے والے اسارام باپو کو عدالت نے ایک لاکھ روپے جرمانے کی سزا بھی سنائی ہے۔اس کے علاوہ اسارام کے بیٹے نارایان سائی پر بھی سورت کی عدالت میں 2002 اور 2004 میں دو بہنوں کے ساتھ جنسی زیادتی کا کیس چل رہا ہے اور سپریم کورٹ نے حال ہی میں اس کیس کو 5 ہفتوں میں نمٹانے کا حکم دیا ہے۔خیال رہے کہ گزشتہ برس بھی بھارت میں سکھوں کے ایک مذہبی پیشوا گرو گرمیت رام رحیم سنگھ کو خواتین کے ساتھ زیادتی کا جرم ثابت ہونے پر 20 برس قید کی سزا سنائی تھی۔متعدد بھارتی فلموں میں جلوہ گر ہونے والے گرو گرمیت رام رحیم سنگھ کی سزا کے بعد بھارت کی متعدد ریاستوں میں مظاہرے بھی پھوٹ پڑے تھے۔

Your Thoughts and Comments