دکاندار کی حاضر دماغی، چاقو بردار لٹیرے کی آنکھ میں مرچیں جھونک کر اسے گرفتار کرادیا

جمعرات اپریل 23:31

مڈلسبرو(اُردو پوائنٹ اخبار آن لائن۔ جمعرات اپریل ء)دکاندار نے حاضر دماغی سے کام لیتے ہوئے چاقو بردار لٹیرے کی آنکھ میں مرچیں جھونک کر اسے گرفتار کرادیا، دکان میں موجود لوگوں نے لٹیرے پر چھڑی ڈنڈے اور مختلف چیزوں سے حملہ کر کے بے بس کر دیا۔غیر ملکی میڈیا کے مطابق حاضر دماغی کے ساتھ اگر تھوڑی بہت ہمت بھی موجود ہو تو انسان کچھ بھی کرسکتا ہے اور اس حوالے سے یہاں ہونے والا ایک واقعہ بطور خاص قابل ذکر ہے۔

ایک مقامی دکان میں کام کرنے والے لوگو ںنے اپنی ہمت اور حاضر دماغی کا برملا اظہار کرتے ہوئے اس لٹیرے کو کمال ہوشیاری سے گرفتار کرادیا ہے جوچاقو لہراتا ہوا انکی دکان میں داخل ہوا تھا مگر اس کی آنکھ پر مرچ کا پائوڈر پھینک کر اسے بے بس کردیا گیا اور پھر اسے گرفتار کرکے پولیس کے حوالے بھی کردیا گیا۔

(جاری ہے)

گرفتاری کے بعد اس نے اعتراف جرم بھی کرلیا ہے اور باخبر ذرائع کا کہناہے کہ اسے ایک طویل مدت کیلئے جیل بھیجا جاسکتا ہے۔

کہا جاتا ہے کہ یہ دکان ایک خاتون چلا رہی تھیں۔ جس نے لٹیرے کے دکان میں داخل ہوتے ہی شور مچایا اور اپنے شوہر کو بلالیا جس نے آتے ہی مرچ کا پائوڈر لٹیرے کی آنکھ میں پھینک دیا۔ یہ واقعہ نارتھ امسبے کے کالاگن علاقے میں پیش آیا جہاں اسکا شوہر بھی کام کرتا تھا۔ پہلی پیشی کے دوران مقامی عدالت کے جج نے بتایا کہ مجرم کو کم سے کم 5سال ایک ماہ کیلئے جیل بھیجا جاسکتا ہے۔

لٹیرے کو قابو کرنے کیلئے دکان میں کام کرنے والے افراد اور موجود لوگوں نے لٹیرے پر چھڑی ڈنڈے اور مختلف چیزوں سے بھی حملہ کیا اور اسے بے بس کرکے رکھ دیا۔ آنکھ میں مرچ چلے جانے کی وجہ سے مجرم اتنا پریشان ہوا کہ اس نے قابو میں آنے سے قبل جو چیزیں چرائی تھیں اسے بھی اپنے پاس رکھنا مشکل ہوگیا اور اس نے تمام چرائی ہوئی چیزیں پھینک دیں اور خالی ہاتھ تھانے جانا پڑا۔

یہ رپورٹ مڈلسبرو سے شائع ہونے والے ایک اخبار میں بھی جاری ہوئی ہے۔ واقعہ کی سی سی ٹی وی فوٹیج میں سارے مناظر صاف نظر آتے ہیں۔ ملزم کے ہاتھ میں موجود چاقو کا دستہ پیلے رنگ کا تھا جبکہ اس نے لوٹی ہوئی چیزیں رکھنے کیلئے اپنے ساتھ ایک تھیلا بھی رکھا ہوا تھا۔ وڈیو میں یہ آواز بھی سنائی دیتی ہے کہ دکان میں داخل ہوتے ہی وہ کیش کائونٹر پر گیا اور وہاں جاتے ہی مطالبہ کیا کہ تمام رقم میرے حوالے کردو۔

متعلقہ عنوان :

Your Thoughts and Comments