امریکا؛غیر قانونی تارکین وطن کیلئے تحفظ کی پالیسی ختم،80ہزار افراد کو ملک سے نکالنے کا فیصلہ،ہنڈیوراس حکومت کا اظہار افسوس

ہفتہ مئی 18:35

واشنگٹن (اُردو پوائنٹ اخبار آن لائن۔ ہفتہ مئی ء)امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے اعلان کے بعد امریکا میں مقیم تارکین وطن کو حاصل تحفظ کی پالیسی کو ختم کرتے ہوئے ہنڈیوراس کے 80 ہزار افراد کو ملک سے نکالنے کا فیصلہ کر لیا گیا ہے،امریکی اقدامات پر ہنڈیوراس حکومت کی جانب سے افسوس کا اظہار کیا گیا۔ہفتہ کو ہنڈیوراس کے مطابق اس پالیسی کے تحت 60 ہزار سے زائد افراد کو جو امریکا میں مقیم ہیں اور کام کر رہے ہیں ان سے ان کے حقوق چھین لیے جائیں گے۔

(جاری ہے)

امریکی ادارہ ہوم لینڈ سیکیورٹی کے مطابق نئے قوانین کے تحت عارضی تحفظ کی پالیسی کو ختم کیا جا رہا ہے،تاہم ہنڈیوراس کے شہریوں کو اٹھارہ ماہ کا وقت دیا جائیگا کہ وہ اس دوران جنوری 2020 تک باضابطہ طریقے سے امریکا چھوڑ دیں۔واضح رہے کہ اس سے قبل ہیٹی،ایل سلواڈور، نیپال اور نیگاراگوئے کے لوگوں کیلئے بھی اسی پالیسی کے تحت ملک چھوڑنے کا اعلان کیا گیا تھا۔یہاں یہ بات بھی قابل ذکر ہے کہ سال 1999 میں سمندری طوفان سے متاثرہ ایک لاکھ سے زائد افراد کو امریکا میں عارضی طور پر پناہ دی گئی تھی

متعلقہ عنوان :

Your Thoughts and Comments