بدین میں مردوں کو نہلانے کے لئے پانی نہیں ہے، ڈاکٹر فہمیدہ مرزا

کاش وزیراعظم پورے پاکستان کے وزیراعظم ہوتے، وزیر اعلیٰ پورے صوبے کے وزیر اعلیٰ ہوتے ۔ صوبوں کو وسائل برابر تقسیم نہیں کئے جا رہے ہیں،قومی اسمبلی میں نقطہ اعتراض پر گفتگو

جمعرات مئی 20:34

اسلام آباد(اُردو پوائنٹ اخبار آن لائن۔ جمعرات مئی ء)سابق سپیکر قومی اسمبلی و پیپلز پارٹی کی رہنما ڈاکٹر فہمیدہ مرزا نے کہا ہے کہ بدین میں مردوں(وفات پانیوالوں ) کو نہلانے کے لئے پانی نہیں ہے۔ کاش وزیراعظم پورے پاکستان کے وزیراعظم ہوتے اور وزیر اعلیٰ پورے صوبے کے وزیر اعلیٰ ہوتے ۔ صوبوں کو وسائل برابر تقسیم نہیں کئے جا رہے ہیں۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے جمعرات کے روز قومی اسمبلی کے اجلاس میں نقطہ اعتراض پر گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ ڈاکٹر فہمیدہ مرزا نے کہا کہ عوام طاقت کا سر چشمہ ہے۔ شہید ذوالفقار علی بھٹو نے کہا تھا موجودہ بجٹ میں این ایف سی ایوارڈ نہیں دیا گیا۔ 1991کا معاہدہ کے تحت صوبوں کو پانی نہیں دیا جا رہا ہے۔ بدین لوئیر سندھ کے لوگ احتجاج کر رہے ہیں۔

(جاری ہے)

بدین نے بچے بغیر بجلی اور پانی کے سو رہے ہیں آنے والی جنگیں پانی پر ہونی ہیں ۔ لیکن تمام صوبوں کو وسائل سے برابر تقسیم ہونی چاہیئے۔ کاش کوئی وزیراعظم پورے ملک کا ہوتا کاش کوزیراعلیٰ پورے صوبے کا ہوتا۔ بدین میں مردوں کو نہلانے کا پانی نہیں ہے جبکہ اپر سندھ میں پانی جا رہاہے۔ پانی اگر کمی ہے تو یہ کمی سب صوبوں کو برابر ہونی چاہیئے۔ ہماری مدت ختم ہو رہی ہے میں تمام لوگوں کا شکریہ ادا کرتی ہوں کہ بدین کے لوگوں کا بھی شکریہ ادا کرتی ہوں میں ان کے لئے اس ایوان میں ان کے حق میں آواز اٹھاتی رہوں گی۔۔

Your Thoughts and Comments