عام انتخابات 2018 کے لیے الیکشن کمیشن نے سیکورٹی فیچرز والے واٹر مارک بیلٹ پیپر استعمال کرنے کا فیصلہ

عام انتخابات 2018 کی تیاریاں، کسی بھی قسم کی دھاندلی اور دونمبری سے بچنے کے لیے الیکشن 2018 کو محفوظ بنایا جائیگا بیلٹ پیپر کی چھپائی مخصوص کاغذ پر ہو گی‘21 کروڑ بیلٹ پیپر کی مکمل تیاری پر 2 ارب سے زائد کے اخراجات ہوں گے‘ذرائع الیکشن کمیشن

جمعرات مئی 23:31

لاہور(اُردو پوائنٹ اخبار آن لائن۔ جمعرات مئی ء) عام انتخابات 2018 کی تیاریاں، کسی بھی قسم کی دھاندلی اور دونمبری سے بچنے کے لیے الیکشن 2018 کو محفوظ بنانے کا عمل جاری، بیلٹ پیپر کی چھپائی مخصوص کاغذ پر ہو گی‘21 کروڑ بیلٹ پیپر کی مکمل تیاری پر 2 ارب سے زائد کے اخراجات ہوں گے۔واٹر مارک بیلٹ پیپر قومی اسمبلی کے لیے سبز، صوبائی اسمبلی کے لیے سفید ہو گاذرائع کے مطابق عام انتخابات 2018 کے لیے الیکشن کمیشن نے سیکورٹی فیچرز والے واٹر مارک بیلٹ پیپر استعمال کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

(جاری ہے)

بیلٹ پیپر کی چھپائی کے لیے واٹر مارک مخصوص کاغذ منگوا لیا گیا ہے۔ واٹر مارک بیلٹ پیپپرز کی چھپائی کے لیے مخصوص کاغذ پرنٹنگ کارپوریشن آف پاکستان کے ذریعے منگوایا گیا ہے۔ ذرائع کے مطابق الیکشن کمیشن نے بیلٹ پیپر کا مخصوص کاغذ فرانس اور برطانیہ سے درآمد کیا گیا۔ بیلٹ پیپر کی چھپائی پر بھی 1 ارب سے زائد اخراجات آئیں گے عام انتخابات میں 21 کروڑ کے قریب بیلٹ پیپر چھاپے جائیں گے۔ 21 کروڑ بیلٹ پیپر کی مکمل تیاری پر 2 ارب سے زائد کے اخراجات ہوں گے۔واٹر مارک بیلٹ پیپر قومی اسمبلی کے لیے سبز، صوبائی اسمبلی کے لیے سفید ہو گا۔

Your Thoughts and Comments