سندھ کے نگراں وزیر اعلی کیلئے ایم کیو ایم اورتحریک انصاف کی جانب سے تاحال کوئی متفقہ نام پیش نہ کیا جاسکا

نگران وزیراعلی کی دوڑمیں سابق چیف الیکشن کمشنر سونوخان بلوچ اور انجینئر حمید سومرو کے نام بھی شامل ہوگئے

اتوار مئی 18:10

کراچی (اُردو پوائنٹ اخبار آن لائن۔ اتوار مئی ء) سندھ کے نگراں وزیر اعلی کے لئے ایم کیو ایم اورتحریک انصاف کی جانب سے تاحال کوئی متفقہ نام پیش نہ کیا جاسکا۔ نگران وزیراعلی کی دوڑمیں سابق چیف الیکشن کمشنر سونوخان بلوچ اور انجینئر حمید سومرو کے نام بھی شامل ہوگئے۔ وزیراعلی سندھ آج (پیر) صوبائی کابینہ سے مشاورت اورکل اپوزیشن سے نگران وزیراعلی کے معاملہ پررابطہ کریں گے۔

متحدہ قومی موومنٹ کی جانب سے تاحال سندھ میں نگران وزیراعلی کے لیے کوئی متفقہ نام پیش نہیں کیا گیا ہے جبکہ تحریک انصاف سندھ بھی خاموش ہے دوسری جانب سندھ میں نگران وزیراعلی کے لیے سامنے آنے والے دونئے ناموں میں سابق الیکشن کمشنرسندھ سونوخان بلوچ اورجیکب آباد سے تعلق رکھنے والے انجینئر حمید سومرو کے نام پربھی اہم حلقوں میں مشاورت جاری ہے۔

(جاری ہے)

وزیراعلی سندھ سید مرا د علی شاہ نگران سیٹ اپ کے معاملے پرآج (پیر) سندھ کابینہ کے اجلاس میں مشاورت کریں گے اورتوقع ہے کہ وزیراعلی سندھ اوراپوزیشن کے مابین 22 مئی کورابطہ ہوگا،سندھ میں نگراں وزیر اعلی کے لئیے جسٹس (ر) زاہد قربان علوی ،سابق چیف سیکریٹری فضل الرحمن، سابق چیف الیکشن کمشنرسندھ سونوخان بلوچ ،انجینئرحمید سومرو ،مرتضی وہاب ، جسٹس (ر) ناصراسلم زاہد اور امیرہانی مسلم جسٹس (ر) دیدارعلی شاہ کے نام اب تک پیش کیے جاچکے ہیں پیپلزپارٹی کی اعلی قیادت نے نگراں وزیر اعلی کے لئیے مرتضی وہاب کا نام پیش کیا تھا اورمتبادل کے طورپر اب جسٹس (ر) زاہد قربان علوی ،سابق چیف سیکریٹری فضل الرحمن اورسونوخان بلوچ کا نام بھی پیش کیا گیا ہے جبکہ اہم حلقوں کی جانب سے نگران وزیراعلی کے لیے انجینئر حمید سومرو کا نام سامنے آیا ہے ۔

تحریک انصاف جسٹس (ر) ناصر اسلم زاہد کو نگران وزیراعلی سندھ مقرر کرنے کے لیے راضی ہے واضح رہے کہ اپوزیشن جماعت فنکشنل لیگ نے نگران وزیراعلی سندھ کے لیے جسٹس (ر) سید غوث علی شاہ کا نام پیش کیا تھا ذرائع کا کہنا ہے کہ سندھ میں نگران وزیراعلی کے لیے وزیراعلی سندھ اور سندھ اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر خواجہ اظہار الحسن کی.مابین باضابطہ مشاورت بجٹ اجلاس کے بعد ہوگی جس میں نگران وزیراعلی سندھ کے نام کا حتمی فیصلہ کرلیا جائے گا۔

Your Thoughts and Comments