ایران کے ساتھ تعلقات بارے امریکی ڈکٹیشن کی ضرورت نہیں،ترجمان صدر موومنٹ

امریکی بدمعاشی اور خواہشات کو تسلیم نہیں کیا جائے گا، ایران ہمارا ہمسائیہ ملک ہے اور دونوں مابین تاریخی، ثقافتی، سماجی، سیاسی، اقتصادی اور تجارتی شعبوں میں تعلقات ہیں،عراقی پالیسی متوازی ہو گی،امریکی پالیسی خطے کے لئے نقصان دہ ہیں

بدھ مئی 23:28

بغداد(اُردو پوائنٹ اخبار آن لائن۔ بدھ مئی ء)عراقی سیاسی جماعت صدر موومنٹ نے کہا ہے کہ ایران کے ساتھ تعلقات بارے امریکی ڈکٹیشن کی ضرورت نہیں، امریکی بدمعاشی اور خواہشات کو تسلیم نہیں کیا جائے گا، ایران ہمارا ہمسائیہ ملک ہے اور دونوں مابین تاریخی، ثقافتی، سماجی، سیاسی، اقتصادی اور تجارتی شعبوں میں تعلقات ہیں،عراقی پالیسی متوازی ہو گی،امریکی پالیسی خطے کے لئے نقصان دہ ہیں۔

(جاری ہے)

غیر ملکی میڈیا کے مطابق صدر موومنٹ نے کہا ہے کہ خطے میں امریکی پالیسی شکست کھاچکی ہی.عراق کے حالیہ انتخابات میں کامیاب سیاسی جماعت صدر موومنٹ نے کہا ہے کہ وہ اسلامی جمہوریہ ایران کے ساتھ تعلقات سے متعلق امریکی خواہشات اور بدمعاشی کو تسلیم نہیں کرے گی.سید مقتدیٰ صدر کی قیادت میں صدر موومنٹ کے ترجمان ضیاء الاسدی نے المیادین چینل کے ساتھ گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ امریکہ، اسلامی جمہوریہ ایران کے ساتھ تعلقات سے متعلق ہمیں ڈیکٹیٹ نہ کری.ضیاء الاسدی نے ایران کے حوالے سے امریکی حکام کے حالیہ بیانات پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران ہمارا ہمسایہ ملک ہے اور دونوں ممالک کے درمیان تاریخی، ثقافتی، سماجی، سیاسی، اقتصادی اور تجارتی شعبوں میں تعلقات برقرار ہیں لہذا ہم اس حوالے سے دوسروں کے ڈیکٹیٹ کو قبول نہیں کریں گی.صدر موومنٹ کے ترجمان نے کہا کہ ہمارے نزدیک امریکی خواہشات کی کوئی حیثیت نہیں ہی. عراق کی پالیسی ایک متوازن معیار کے تحت ہونی چاہئے جس میں عراقی مفادات کی حفاظت اور پڑوسی ممالک کے مفادات کا تحفظ شامل ہوں.انہوں نے کہا کہ خطے میں امریکی پالیسی شکست کھاچکی ہی. اور آج امریکہ کی وجہ سے ہی خطہ شدید خطرات سے دوچار ہی.صدر موومنٹ کے ترجمان نے اس بات پر زور دیا کہ ان کی جماعت کے سربراہ سید مقتدیٰ صدر ہرگز یہ اجازت نہیں دیں گے کہ عراقی سرزمین کو ہمسایہ ممالک پر حملے کے لئے استعمال کیا جائی.

متعلقہ عنوان :

Your Thoughts and Comments