2018ء کا الیکشن ملک کی تقدیر بدلے گا،عمران خان

عمران خان کی سردار ذوالفقار کھوسہ کے گھر آمد،ذوالفقار کھوسہ کی پی ٹی آئی میں شمولیت کا خیرمقدم،ضروری ہے الیکشن میں ایمپائر نیوٹرل ہوں،اسی لیے نگراں وزیراعلیٰ کیلئے دوبارہ نام فائنل کیے۔چیئرمین پی ٹی آئی عمران خان کی گفتگو

جمعہ جون 18:11

لاہور(اُردو پوائنٹ اخبار آن لائن۔ جمعہ جون ء):مسلم لیگ ن کے دیرینہ ساتھی سردارذوالفقار کھوسہ نے تحریک انصاف میں شمولیت کا اعلان کردیا ہے،چیئرمین پی ٹی آئی عمران خان نے ان کی پارٹی میں شمولیت کا خیرمقدم کیا ہے۔میڈیا رپورٹس کے مطابق چیئرمین پی ٹی آئی عمران خان نے آج ن لیگ کے منحرف رہنماء سردار ذوالفقار کھوسہ سے ملاقات کی۔

جس میں سیاسی صورتحال پرتبادلہ خیال کیا گیا۔ اس موقع پر سردارذوالفقار کھوسہ نے تحریک انصاف میں شمولیت کا اعلان کردیا ۔چیئرمین پی ٹی آئی عمرا ن خان نے ذوالفقار کھوسہ کے ہمراہ میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہاکہ کھوسہ فیملی کو تحریک انصاف میں شمولیت پر خوش آمدید کہتا ہوں۔ انہوں نے ایک سوال پر کہاکہ دنیا میں نگراں حکومت کے مسئلے نہیں آتے۔

(جاری ہے)

کیونکہ ان کا الیکشن سسٹم ہی مضبوط ہوتا ہے۔انہوں نے کہاکہ پاکستان کی تاریخ کا اہم الیکشن ہونے جا رہا ہے۔ ایمپائر ایسا ہو جس پرسب کو اعتماد ہو۔ ہم نے نام دیا لیکن جب عوام کا دباؤ آیا توپھر ہم نے نام واپس لیا۔ عمران خان نے کہاکہ الیکشن 2013ء میں سب نے کہاکہ دھاندلی ہوئی۔کیونکہ پچھلی بار نگراں سیٹ اپ فیل ہوگیا تھا۔انہوں نے کہاکہ پاکستان میں 1970ء کے بعد یہ دوسرا الیکشن ہو جوپوری قوم کہے کہ صاف اور شفاف ہیں۔

اب ضروری ہے الیکشن میں ایمپائر نیوٹرل ہوں۔2018ء کا الیکشن ملک کی تقدیر بدلے گا۔انہوں نے کہاکہ فاروق بندیال ن لیگ میں کئی سالوں سے شامل تھے۔لیکن جب وہ ہمارے پاس آئے توشور مچ گیا۔میں تواس کواچھا سمجھتا ہوں کہ ن لیگ میں نہیں بلکہ پی ٹی آئی میں شامل ہونے پرشور مچا اور پھر ہم نے ایکشن لیا۔انہوں نے کہاکہ سوشل میڈیا نے جس طرح اس ایشو اٹھایا مجھے خوشی ہے کہ پی ٹی آئی اور ن لیگ میں معیار ہے کہ اس ایشو کوپہلے نہیں اٹھایا گیا۔

انہوں نے کہاکہ ہم چاہتے ہیں کہ الیکشن وقت پرہوں۔انہوں نے کہاکہ خواجہ آصف کا فیصلہ قبول کرتے ہیں۔ لیکن سوچنا چاہیے کہ ایک ملک کا وزیرخارجہ جب کسی دوسرے ملک کی کمپنی کا ملازم بن جاتا ہے۔یہ دنیا کی کسی جمہوریت میں نہیں ہوتا ہے۔اس موقع پرسردار ذوالفقار کھوسہ نے کہا کہ مسلم لیگ اب ن لیگ بن گئی ہے۔ن لیگ میں مجھ جیسا نظریاتی مسلم لیگی کی وہاں کوئی جگہ نہیں ہے۔میں نے ان کواس وقت چھوڑا جب وہ عروج میں تھے ایک بھائی تیسری بار وزیراعظم اور دوسرا وزیراعلیٰ بنا تھا۔ جب پستی میں تھے تومیں نے ان کا جھنڈاٹھائے رکھا۔انہوں نے کہاکہ اقتدار میں آئے تومشرف کے وزیرنوازشریف کے وزیربن گئے۔میں نے سوچ سمجھ کر عمران خان کی قیادت پراعتماد کیا ہے۔

Your Thoughts and Comments