پشاور چرچ حملہ کیس میں عدالتی فیصلے پر عملدرآمد نہ کرنے پر چیف جسٹس کا اظہار برہمی

عدالتی فیصلے سے متعلق عملدرآمد کی رپورٹ طلب

پیر جون 20:05

لاہور (اُردو پوائنٹ اخبار آن لائن۔ پیر جون ء) پشاور چرچ حملہ کیس میں عدالتی فیصلے پر عملدرآمد نہ کرنے پر چیف جسٹس آف پاکستان کا اظہار برہمی۔ فاضل چیف جسٹس نے وفاقی حکومت سے عدالتی فیصلے سے متعلق عملدرآمد کی رپورٹ طلب کر لی۔ اگر عدالتی فیصلے پر عملدرآمد نہ ہوا تو چاروں صوبوں کے چیف سیکرٹریز ذاتی طور پر ذمہ دار ہوں گے۔

چیف جسٹسآگاہ کیا جائے کہ سپریم کورٹ کے فیصلے کی روشنی میں قومی اقلیتی کونسل کیوں نہیں بنائی گئی۔

(جاری ہے)

بتایا جائے مزہبی رواداری ٹاسک فورس کیوں عمل میں نہیں لایا گیا۔ جسٹس عمر عطا بندیال نے کہا کہ نیشنل ایکشن پلان کے مطابق کیا اقدامات کیے گئے ہیں۔ چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ چار سال گزر گئے مگر عدالتی فیصلے پر عملدرآمد نہیں ہوا۔ درخواست گزار ثاقب جیلانی نے موقف اختیار کیا کہ پنجاب اور کے پی کے میں نصاب سے نفرت انگیز مواد کافی حد تک دور کر دیا گیا ہے۔دیگر صوبوں میں کوئی اقدامات نہیں ہوئے۔ چیف جسٹس نے کہا کہ اگر عدالتی فیصلے پر عملدرآمد نہیں ہوتا تو وفاقی سیکرٹری مذہبی امور ذاتی طور پر پیش ہو کر وضاحت دیں۔

Your Thoughts and Comments