جاپان میں 6.1 شدت کا زلزلہ، 3 فراد ہلاک‘90ہزار سے زائد زخمی‘ایک لاکھ 70 ہزار گھر بجلی سے محروم

زلزلے کی شدت ریکٹر اسکیل پر 6.1 ریکارڈ کی گئی اور اس کا مرکز اوساکا کے شمالی علاقے میں 13 کلومیٹر زیر زمین تھا

پیر جون 12:00

اوساکا(اُردو پوائنٹ اخبار آن لائن۔ پیر جون ء) جاپان کے شہر اوساکا میں پیر کی صبح آنے والے زلزلے میں ایک بچی سمیت 3 افراد ہلاک ہوگئے، جبکہ 90 سے زائد افراد کے زخمی ہوگئے۔امریکی خبر رسان ادارے ایسوسی ایٹ پریس کے مطابق زلزلے کی شدت ریکٹر اسکیل پر 6.1 ریکارڈ کی گئی اور اس کا مرکز اوساکا کے شمالی علاقے میں 13 کلومیٹر زیر زمین تھا، زلزلہ بہت شدت سے محسوس کیا گیا تاہم سونامی کی وارننگ جاری نہیں کی گئی۔

زلزلے سے کئی علاقوں میں دیواریں گر گئیں اور کھڑکیاں ٹوٹ گئیں اس کے ساتھ گھروں میں اور دکانوں میں سامان گر کر بکھر گیا جبکہ کئی سڑکوں میں گڑھے پڑ گئے اور پانی کی پائپ لائنز پھٹ گئیں جس کے باعث گھروں میں پانی کی فراہمی معطل ہوگئی۔

(جاری ہے)

اس حوالے سے مقامی پولیس نے بتایا کہ ٹکاسوکی شہر کے ہلاک ہونے والی بچی کی عمر 9 سال تھی جو اسکول میں دیوار گرنے سے ہلاک ہوئی، جبکہ 80 سالہ شخص بھی دیوار گرنے کی زد میں آکر ہلاک ہوا، ہلاک ہونے والے تیسرے شخص کی عمر 84 سال تھی جو اپنے گھر میں زلزلے کے باعث بک شیلف گرنے سے ہلاک ہوا۔

فرانسیسی خبر رساں ادارے اے ایف پی کے مطابق زلزلے کے باعث بیشترعلاقوں کی بجلی معطل ہوگئی، کنسائی الیکٹرک کمپنی کے مطابق تقریباً ایک لاکھ 70 ہزار گھر بجلی سے محروم ہیں، اس کے ساتھ شہر میں کئی مقامات پر آگ بھڑک اٹھنے کی بھی اطلاعات ہیں۔اس حوالے سے جاپانی نیوکلیئر ریگولیٹری اتھارٹی کا کہنا ہے کہ مقامی جوہری پاور پلانٹ میں کوئی خرابی دیکھنے میں نہیں آئی تاہم ہنڈا سمیت کچھ کمپنیز نے اپنے پیداواری پلانٹس میں کام روک دیا۔

زلزلہ صبح 8 بجے آیا جب زیادہ تر افراد پلیٹ فارمز پر اپنی ٹرینوں کے منتظر تھے، واضح رہے کہ جاپان میں روزمرہ کی آمدورفت کے لیے زیادہ تر ٹرینوں کا استعمال کیا جاتا ہے، تاہم زلزلے کے سبب بلٹ ٹرین سمیت دیگر ٹرینوں کی آمدورفت بھی معطل ہوگئی، اس کے ساتھ ساتھ کئی درجن ڈومیسٹک پروازیں بھی معطل کردی گئیں۔زلزلے کے بعد آفٹر شاکس کا سلسلہ جاری ہے، میٹرولوجیکل ڈپارٹمنٹ نے شہریوں کو مزید زلزلوں کے حوالے سے خبردارکرتے ہوئے محفوظ رہنے کی ہدایت کی ہے، جبکہ لینڈ سلائیڈنگ اور گھروں کے تباہ ہونے کا بھی خدشہ ظاہر کیا جارہا ہے۔دوسری جانب حکومتی ترجمان نے بھی اس بات کا اندیشہ ظاہر کیا ہے کہ مزید شدید آفٹر شاکس آنے کا امکان ہے۔

Your Thoughts and Comments