حلقہ این اے 154 سے تعلق رکھنے والے سینکڑوں افراد کا بنی گالہ میں عمران خان کی رہائش گاہ کے باہر سکندر بوسن کی شمولیت کے خلاف دھرنا اور شدید احتجاج

بدھ جون 23:50

اسلام آباد (اُردو پوائنٹ اخبار آن لائن۔ بدھ جون ء) ملتان کے حلقہ این اے 154 کی کئی یونین کونسلوں سے تعلق رکھنے والے سینکڑوں افراد نے بنی گالہ پہنچ کر سکندر بوسن کی پارٹی میں شمولیت کے خلاف عمران خان کی رہائش گاہ کے باہر دھرنا دیا اور شدید احتجاج کیا اور نعرے بازی بھی کی ۔ تفصیلات کے مطابق ملتان کے حلقہ این اے 154 کی کئی یونین کونسلوں سے تعلق رکھنے والے سینکڑوں افراد نے بنی گالہ پہنچ کر سکندر بوسن کو ٹکٹ دیئے جانے کے خلاف عمران خان کی رہائش گاہ کے باہر دھرنا دیا اور شدید احتجاج کیا اور نعرے بازی بھی کی ۔

مظاہرین نے درجنوں بسوں اور گاڑیوں پر ملتان سے مارچ شروع کیا اور وہ دو روز قبل بنی گالہ میں عمران خان کی رہائش گاہ کے باہر پہنچے انہوں نے پلے کارڈز اٹھا رکھے تھے جن پر سابق وفاقی وزیر خوراک و زراعت اور مسلم لیگ ن چھوڑ کر تحریک انصاف میں شامل ہونے والے رہنماء سکندر بوسن کی مذمت کیے جانے پر مشتمل نعرے درج تھے ۔

(جاری ہے)

وہ موقع پرستوں کے خلاف احتجاجی نعرے بھی لگا رہے تھے کہ ایسے لوگ وفاداروں کا حق مار کر پی ٹی آئی میں گھس گئے ہیں ۔

اس موقع پر پی ٹی آئی ملتان سٹی یوتھ کے صدر مہر شعیب آہیر کا کہنا تھا کہ ان مظاہرین میں اپنا پیغام پی ٹی آئی کی مرکزی قیادت تک پہنچانے کے لئے چھ سو کلومیٹر کا سفر کیا ۔ انہوں نے کہا کہ ملک احمد حسین ڈہر جیسے پر عزم رہنما ء کو این اے 154 سے ٹکٹ دیا جانا چاہیے تھا سکندر بوسن کو وہاں سے ٹکٹ دینا غلط ہے ، یونین کونسلر جہانگیر آباد کے رانا جنگ شیر نے کہا کہ این اے 154 کے ووٹرز اور سپورٹرز لوٹیروں ، جہاگیرداروں اور لوٹوں کے خلاف ہیں اور وہ کسی کو چور دروازے سے پی ٹی آئی میں داخل ہونے کی اجازت نہیں دیں گئے ۔

انہوں نے کہا کہ اچھے کردار کے لوگوں کو شامل کیا جانا چاہیے جو ہر مشکل وقت میں پارٹی کا ساتھ دیتے ہیں ۔ یونین کونسل قاسم بیلا کے ملک شفیق نے کہا کہ پارٹی قیادت کو بد کردار لوگوں کے آگے دروازے بند کر دینے چاہیے ۔ انہوں نے کہا کہ ایسے لوگوں کی حوصلہ شکنی کی جائے اور ایسے لوگوں کو پارٹی میں شامل نہ کیا جائے اور کئی سالوں سے پارٹی کے ساتھ رہنے والے لوگوں کو ٹکٹ دیئے جائیں ۔

Your Thoughts and Comments