پاک چین دوستی کے استحکام کی جانب ایک اور اہم قدم ، چین کا پاکستانی شہریوں کیلئے ویزہ پالیسی میں نرمی کرنے کا اعلان

پاکستانی کاروباری شخصیات اور سرکاری ملازمین کو دورہ کیلئے اب کسی بھی دعوت نامہ کی ضرورت نہیں رہے گی چین پاکستان اقتصادی رہداری منصوبہ خوش اسلوبی کے ساتھ آگے بڑھ رہا ہے، پاکستانی شہریوں کیلئے ویزہ فراہمی کے عمل کو مزیدآسان بنائیں گے ، ویزہ سہولیات باہمی تجارت کو فروغ دینے اور تجارتی خسارہ کو کم کرنے میں مدد فراہم کریگی، یائوجنگ عیدالفطر کے بعد سے مزید پاکستانی شخصیات تجارت کے مواقع تلاش کرنے کیلئے چین جانے کیلئے خواہش مند ہیں چینی سفارتخانہ کاروباری شخصیات کو ویزہ فراہمی کے عمل میں سہولیات دینے کیلئے پوری طرح سے تیار ہے ، اب مزید پاکستانی شہریوں کو ملازمتیں دیں گے ، چینی سفارتخانے کے ڈائریکٹر کونسلرسیکشن یانگ لیان چھن کی گفتگو

جمعرات جون 19:50

اسلام آباد(اُردو پوائنٹ اخبار آن لائن۔ جمعرات جون ء)چین نے پاکستانی شہریوں کیلئے ویزہ پالیسی میں نرمی کرنے کا اعلان کردیا ہے، پاکستانی کاروباری شخصیات اور سرکاری ملازمین کو چین کا دورہ کرنے کیلئے کسی بھی دعوت نامہ کی ضرورت نہیں رہے گی۔ جمعرات کو چینی سفارت خانے کی طرف سے جاری کردہ اعلامیہ میں کہا گیا ہے کہ چین نے پاکستانی شہریوں کو ویزہ کی فراہمی کا عمل آسان بنادیا ہے، رواں سال یکم اپریل سے چینی سفارت خانہ نے ویزوں کی گیٹگری ایف اور ایم کیلئے نئی پالیسی جاری کردی ہے جس کے تحت ایسے پاکستانی جنہوں نے یکم جنوری 2016کے بعد سے 3مرتبہ چین کا دورہ کیا ہے اور وہ کسی بھی مقامی چیمبر کے ساتھ رجسٹرڈ ہیں یا سرکاری ملازم ہیں انہیں چین کا دورہ کرنے کیلئے کسی بھی قسم کے دعوت نامہ کی ضرورت نہیں رہے گی۔

(جاری ہے)

عمومی طور پر چینی کا دورہ کرنے کیلئے مزکورہ دعوت نامے چینی کی مقامی حکومتوں اور بڑی کمپنیوں کی جانب سے جاری کیے جاتے تھے جنہیں حاصل کرنا مشکل عمل تھا۔ اعداد شمار کے مطابق یکم اپریل سے 15جون تک ویزوں کو جاری کرنے شرح میں 11 فیصد اضافہ ہوا، جس کے تحت 15000کاروباری ویزے جاری کیے گئے ۔ چینی سفارتخانہ کے کونسلر سیکشن میں دو پاکستانی خواتین کام کررہی ہیں جو کہ پاکستانی شہریوں کو ویزہ حاصل کرنے کے عمل میں مکمل رہنمائی کرتی ہیں ۔

کونسلر سیکشن کے ڈائریکٹر یانگ لیان چھن نے کہا کہ درخواست گزاروں کو مزید سہولیات فراہم کرنے کیلئے نیا سٹاف بھی بھرتی کیا گیاہے جو کہ زبان کے حوالے حائل رکاوٹ کو ختم کرنے کا ذریعہ بنا ہے۔ ہمارے تمام کونسلر آفسرز انگریزی میں بات کرتے ہیں جس کے باعث پاکستان شہریوں کے ساتھ ویزے جاری کرنے کے عمل کے دوران انٹرویو میں سمجھ بوجھ کے حوالے مشکلات پیش آرہی تھیں اور ویزہ درخواستیں مسترد ہورہی تھیں تاہم نئے پاکستانی سٹاف نے درخواست گزاروں کے مسائل حل کرنے میں مدد فراہم کی ہے۔

کونسلر سیکشن میں نئے سٹاف کی بھرتی چینی سفیر یائو جنگ کی ہدایت پر کی گئی ہیں۔یائو جنگ کی ذمہ داریاں سنبھالنے کے بعد سے پاکستان شہریوں کو ویزہ حاصل کرنے کے عمل میں سہولیات فراہم کی جارہی ہیں۔ یائو جنگ کی پاکستانی صنعتی و کاروباری شخصیات سے ملاقاتیں انتہائی حوصلہ افزاء رہی ہیں۔ یائو جنگ کا خیال ہے کہ باہمی سمجھ بوجھ تعاون اور دوطرفہ تبادلے دونوں ممالک کے مابین سدابہار دوستی کو فروغ دینے میں اہم کردار ادا کرسکتے ہیں۔

یائو جنگ نے تمام کونسل آفیسرز پر زور دیا ہے کہ چین کا ویزہ حاصل کرنے کے خواہش مند پاکستانی شہریوں کو گرم جوشی سے خوش آمدید کہا جائے۔ یائو جنگ کا کہنا ہے کہ چین پاکستان اقتصادی رہداری منصوبہ خوش اسلوبی کے ساتھ آگے بڑھ رہا ہے پاکستانی شہریوں کیلئے ویزہ فراہمی کے عمل کو آسان بنائیں گے تاکہ سی پیک کی تعمیر کا عمل باآسانی آگے بڑھے۔

چین کی جانب سے پاکستانیوں کیلئے ویزہ پالیسی میں سہولیات باہمی تجارت کو فروغ دینے اور تجارتی خسارہ کو کم کرنے میں مدد فراہم کریگی۔ یانگ لیان چھن نے کہا ہے کہ عیدالفطر کے بعد سے مزید پاکستانی شخصیات تجارت کے مواقع تلاش کرنے کیلئے چین جانے کیلئے خواہش مند ہیں چینی سفارتخانہ کاروباری شخصیات کو ویزہ فراہمی کے عمل میں سہولیات دینے کیلئے پوری طرح سے تیار ہے۔ اب مزید پاکستانی شہریوں کو ملازمتیں دیں گے تاکہ ویزہ درخواست کی وصولی کا عمل آسان بنایا جاسکے۔

متعلقہ عنوان :

Your Thoughts and Comments