سندھ ہائی کورٹ میں محکمہ اطلاعات میں پونے پانچ ارب روپے کرپشن ریفرنس کی سماعت

ملزم انعام اکبر کو پیرول پر رہا کرنے والے ہوم سیکریٹری بیماری کے سبب پیش نہ ہوسکے ایڈیشنل سیکریٹری نے پیش ہو کر عدالت سے معافی طلب کرتے ہوئے آئندہ ایسا نہ ہونے کی یقین دہانی کرادی

جمعرات جون 22:10

کراچی (اُردو پوائنٹ اخبار آن لائن۔ جمعرات جون ء)سندھ ہائی کورٹ میں محکمہ اطلاعات میں پونے 5 ارب روپے کرپشن ریفرنس میں نامزد ملزم انعام اکبر کو پیرول پر رہا کرنے سے متعلق معاملے پر سماعت جمعرات کو ہوئی۔عدالت میں ملزم انعام اکبر کو پیرول پر رہا کرنے والے ہوم سیکریٹری بیماری کے سبب پیش نہ ہوسکے جبکہ انکی جگہ پر ایڈیشنل سیکریٹری ہوم گنہور علی لغاری نے پیش ہو کر عدالت سے معافی طلب کرتے ہوئے آئندہ ایسا نہ ہونے کی یقین دہانی کرائی۔

دوران سماعت عدالت نے ایڈیشنل ہوم سیکرٹری سے استفسار کیا کہ پیرول پر رہائی کی درخواست ہوم سیکرٹری تک کیسے پہنچی، عدالتی استفسار پر ایڈیشنل ہوم سیکرٹری نے بتایا ہوم ڈیپارٹمنٹ میں اس حوالے سے کوئی اندراج نہیں درخواست کورئیر سروس یا پھر کسی خود جمع کرائی ہے۔

(جاری ہے)

عدالت نے دوبارہ استفسار کیا دفتر میں ڈاک کے آنے جانے کا کوئی کوئی سسٹم نہیں، معاملے عدالت میں ہونے کے کا علم ہونے کے باوجود ہوم سیکرٹری نے یہ درخواست کیوں کی۔

آج کل موبائل فون کا دور ہے علم میں انے کے بعد فیصلہ واپس لیا جاسکتا تھا۔عدالت کی جانب دوباری استفسار پر ایڈیشنل ہوم سیکرٹری نے بتایا سسٹم موجود ہے ،جب آئی جی نے ہوم سیکرٹری کو اس بارے میں بتایا تو وہ آرڈر جاری کرچکے تھے۔ایڈیشنل ہوم سیکرٹری نے عدالت نے معافی طلب کرتے ہوئے موقف اپنایا کہ معافی دی جائے آئندہ شکایت کا موقع نہیں دیا جائے گا۔عدالت نے اس موقع پر ریماکس دیا کہ عدالت سے اس حوالے سے اجازت تو دور کی بات اطلاع دینے کی بھی زحمت نہیں کی گئی۔کیا نیب کو اس حوالے پتہ ہے کہ قیدی کہاں تھا۔عدالت نے معاملے پر فیصلہ محفوظ کرتے ہوئے سماعت ملتوی کردی۔#

Your Thoughts and Comments