Zindagi Ko Khushgawar Banain

زندگی کو خوشگوار بنائیں

Zindagi Ko Khushgawar Banain

مریم صدیق
انٹرنیٹ اور سوشل میڈیا کے اس دور میں اپنی صحت سے غافل ہر انسان مشینی انداز میں زندگی بسر کر رہا ہے۔نہ اپنی صحت کی فکرہے نہ اپنے ارد گرد کے لوگوں کی۔موبائل ہاتھ میں ہو اور انٹر نیٹ بھی میسر ہوتو سونے پر سہاگہ والی بات ہے ۔نمبر ون اور ہائی اسٹیٹس کہ اس دوڑ میں ہماری زندگی کا سکون ،ہماری صحت اور ہماری حقیقی خوشیاں تو کہیں بہت پیچھے رہ گئیں ہیں۔

اگر کچھ باقی رہا ہے تو پریشانی ،ڈپریشن ،رشک اور حسد کی کیفیات ۔ہماری یہی عادات ہمیں جسمانی اور ذہنی مریض بنارہی ہیں جن کا جلد از جلد سدباب کرنا بے حد ضروری ہے ۔صحت مند ،پرسکون اور منظم زندگی گزارنے کے لیے درج ذیل چند اصولوں کو خود پر لاگو کرلیں۔
جدول:
اپنا جدول(ٹائم ٹیبل)ترتیب دیں۔

(جاری ہے)

جس میں اپنے وقت کو اس طرح تقسیم کریں کہ اپنے ہر کام کے لیے مناسب وقت ترتیب دیں جس پر آپ عمل بھی کر سکیں اور اب اس پر سختی سے کار بند رہیں۔


ورزش :
صبح کے وقت ورزش کرنے کی عادت بنائیں۔صبح کے وقت فضا میں آکسیجن کثیر مقدار میں موجود ہوتی ہے جو پھیپھڑوں کے لیے بے حد مفید ہے۔ایک آدھا گھنٹہ ورزش لازمی کریں یہ سارا دن آپ کو چاق وچوبند رکھنے کے لیے کافی ہے۔ورزش ہڈیوں اور پٹھوں کے لیے بہت مفید ہے،اس سے دماغی وذہنی صحت اور یاد داشت بہتر ہوتی ہے۔ اس سے وزن کو کم کرنے میں مدد ملتی ہے اور جلد تر و تازہ ہوتی ہے ۔

روزانہ ورزش نہیں کر تے تو چہل قدمی کو معمول بنالیں۔
متوازن غذا:
اکثر ٹین ایجرز پڑھائی میں مشغول ہو کر اور خواتین گھر کے کاموں میں مصروف ہونے کی وجہ سے کھانا وقت پر نہیں کھاتیں۔فاسٹ فوڈ مصروفیت اور وقت کی بچت کے لیے ہماری زندگی کا جزولازم بن چکا ہے بیماریوں کی پیداوار کا سب سے بڑا ذریعہ ہے ۔دل کی بیماریاں ،موٹاپا ،کولیسٹرول اور اس کے علاوہ کئی دیگر امراض اسی فاسٹ فوڈ کے مرہون منت ہیں۔

اپنی روز مرہ کی روٹین میں فاسٹ فوڈ کے بجائے پھل اور سبزیوں کو شامل کیجیے۔ہماری خوراک میں اگر ضروری اجزاء شامل نہیں ہوں گے تو ہماری خوراک جسمانی ضروریات کے لحاظ سے نامکمل ہو گی۔ایسی نامکمل خوراک نہ صرف جسمانی ضروریات پوری کرنے میں ناکام رہتی ہے بلکہ اس سے ہم مختلف بیماریوں کا شکار ہو جاتے ہیں۔انسانی جسم کا 60سے70فیصد حصہ پانی پر مشتمل ہے ۔

پانی جسم کے فاسد مادے نکالنے میں بھی ضروری ہے ۔ہر عمر کے خواتین وحضرات کے لیے ضروری ہے کہ وہ بازاری کھانوں سے پرہیز کرتے ہوئے متوازن غذا کو اپنی خوراک کا حصہ بنائیں۔
نیند:
چہرے کی خوبصورتی کے لیے نیند بہت اہم ہے اور بغیر نیند کے آنکھوں کے گرد سیاہ حلقے اور چہرہ اتر جانا تو عام ہے مگر ایک تحقیق میں یہ بھی بتایا گیا ہے کہ نیند کی بہت زیادہ کمی آپ کی جلد کو تیزی سے بڑھاپے کی جانب دھکیل دیتی ہے جس کی وجہ جسم میں تناؤ کا باعث بننے والے ہارمون کورٹیسول کی زیادہ مقدار ریلیز ہونا ہے اور اس کی افراط جلد کو ہموار اور گداز رکھنے والے پروٹین کولیگین کو کام نہیں کرنے دیتی ۔

بے خوابی(انسو مینیا)دور جدید کا ایسا تحفہ ہے جس نے ہر عمر کے افراد کو اپنی لپیٹ میں لے لیا ہے ۔نیند پوری نہ ہونے کے باعث ہمارے مزاج میں چڑ چڑاپن ،تھکاوٹ اور ذہن کا متحرک نہ ہونا عام سی بات ہے۔
مثبت سوچ:
ہم غور کریں تو ہماری زندگی کے آدھے سے زیادہ مسائل ہماری منفی سوچ کے سبب ہیں۔کوئی کام مکمل نہ ہوتو منفی سوچ، کسی نے اچھے سے بات کی تو منفی سوچ،کسی نے اچھے سے بات نہ کی تو بھی منفی سوچ۔

غرض یہ ہے کہ ہم نے مثبت چیزوں اور مثبت سوچ کو خود سے دور کر دیا ہے۔اسی منفی سوچ نے ہم سے ہمارے دوست ،رشتے دار ،خوشی اور سکون سب چھین لیا ہے۔کوئی ہمارے ساتھ اچھا کرے تو بھی ہم سب سے پہلے یہی سوچتے ہیں کہ ضرور اس میں شخص کا کوئی فائدہ ہو گا۔یہ منفی سوچ کئی اور برائیوں کو جنم دیتی ہے۔اس لیے اگر خوش رہنا چاہتے ہیں،پر سکون رہنا چاہتے ہیں تو اپنی سوچ کو بدلیں ۔

لوگوں کے رویوں میں اور روز مرہ زندگی میں اپنے اردگرد مثبت چیزوں کی تلاش شروع کر دیں۔اپنے گھر والوں کے ساتھ وقت گزاریں ،خوش رہنے کے لیے چھوٹی چھوٹی وجوہات تلاش کریں۔اپنے رویے کو مثبت بنائیں آپ پر سکون ہو جائیں گے۔یہ زندگی خداوند کریم کا انمول تحفہ ہے ،اسے رشک و حسد،یا لا یعنی چیزوں میں مصروف رہ کر ضائع نہ کریں بلکہ اس کی خوب صورتی سے لطف اٹھائیں۔آج سے ہی اپنی زندگی کا لائحہ عمل طے کرکے بارش کا پہلا قطرہ بن جائیں۔

تاریخ اشاعت: 2019-10-29

Your Thoughts and Comments