بند کریں
صحت مضامینغذا اور صحتعام امراض اور ان کے علاج

مزید غذا اور صحت

پچھلے مضامین - مزید مضامین
عام امراض اور ان کے علاج
علاج کے لیے مرض کا نفسیاتی تجزیہ کرنا اور اصل سبب دور کرنا دواؤں کے استعمال سے زیادہ اہم اور مفید ہے زیادہ تر بیماریوں کی جڑ غذامیں ہوتی ہے
نظام ہضم کی بیماریاں:
نظام ہضم ہمارے جسم کا سب سے زیادہ غیر متوازن نظام ہے اس نظام کا بہت سے بیماریوں کا سبب نفسیاتی نوعیت کا ہوتا ہے ان کے علاج کے لیے مرض کا نفسیاتی تجزیہ کرنا اور اصل سبب دور کرنا دواؤں کے استعمال سے زیادہ اہم اور مفید ہے زیادہ تر بیماریوں کی جڑ غذامیں ہوتی ہے مناسب غذا کے استعمال سے ان سے نجات حاصل کی جاسکتی ہے یہ بیماریاں عموماً مہلک نہیں ہوتیں لیکن زندگی کو بے مزہ ضرور کردیتی ہیں۔
منہ اورزبان کے چھالے: مردوں کی نسبت اور عورتیں اس بیماری کا زیادہ شکار ہوتے ہیں عموماً دانت نکالتے وقت بچوں کے منہ میں چھالے بن جاتے ہیں بڑوں میں اس کے اہم اسباب زیادہ تمباکو نوشی زیادہ گرم چائے یا کھانا،بدہضمی اورمنہ کی صفائی سے غفلت ہیں صحت کی کمزوری اور غیر متوازن غذا کا استعمال اس بیماری کے راہ ہموار کرتے ہیں عورتوں میں منہ پکنے کا سبب عموماً نفسیاتی نوعیت کا ہوتا ہے بعض اوقات بخار کے بعدبھی میں چھالے پڑجاتے ہیں۔
علاج: منہ صاف رکھیں منہ میں یورک ایسڈ گلیسرین لگائیں اگر چھالے بہت زیادہ درد کررہے ہوں تو ان پر سلور نائٹریٹ لگوا کر درد سے نجات حاصل کی جاسکتی ہے اسپرین(اسپرو) بھی درد کو کم کردیتی ہے اگر بیمار بخار یا کسی دوسری بیماری سے صحت یاب ہورہا ہو یا اس کی صحت کمزور یو یااس کی غذا غیر متوازن رہی ہو تو اسے اچھی غذا دیں جس میں لمحی غذائیں(گوشت،مچھلی،دودھ انڈا وغیرہ)اور پھل اور سبزیاں بھی شامل ہوں بدہضمی کا علاج کرائیں تمباکو نوشی سے پرہیز ضروری ہے اگر چھالوں کا سبب کمزوری صحت ہو تو مناسب غذا کے علاوہ مریض کو وٹامن بی کمپلیکس (ہر چھ گھنٹے بعد دو گولیاں)کھلائیں۔اور اگر مریض کسی صدمے یا نفسیاتی کشمکش یا شکار ہو تو اسے دور کرنے کی کوشش کریں بعض اوقات منہ میں چھالے پڑنے کا سبب الرجی ہوتی ہے جو کسی نئی غذا یا مشروب یا نئے ٹوتھ پیسٹ کے استعمال سے ظاہر ہوتی ہے ایسی چیز کا استعمال روک دیں بعض اوقات جراثیم وائرس،فنگس،دھاتیں اور بعض اوقات منہ پکنے کا سبب بن سکتی ہے ان صورتوں میں گھر پر علاج کرنا مشکل ہوتا ہے اگر گھریلو طریقے کارگر نہ ہوں تو ڈاکٹر سے رجوع کریں۔
منہ سے بدبو آنا: سگریٹ نوشی نسوار کے استعمال منہ کی صفائی سے غفلت منہ پکنے اور دانتوں اور مسوڑھوں کی بیماریوں کے باعث منہ سے بدبو آنے لگتی ہے بعض اوقات دائمی زکام (یا بچوں میں ناک بہنے)سے بھی منہ سے بدبو آنے لگتی ہے قے اور بدہضمی بھی کبھی کبھار اس کا سبب بنتی ہے۔
علاج: اصل سبب دور کرنے کی کوشش کریں پیپر منٹ یا کلوروفل کی گولیاں چوسنے سے منہ میں تازگی آسکتی ہے کلوروفل والے(سبز)ٹوتھ پیسٹ بھی مارکیٹ میں عام دستیاب ہیں بعض اوقات پھیپھڑوں یا معدے کے گلنے سڑنے کے باعث منہ سے بدبو آنے لگتی ہے لیکن اس صورت میں متاثرہ شخص بری طرح بیمار ہوتا ہے ایسے شخص کو فوری طور پر ڈاکٹری معائنہ کرانا چاہیے۔

(0) ووٹ وصول ہوئے